اگر اپوزیشن جماعتوں اور قوم نے وزیراعظم کو احتساب کے لیے مجبور کردیا تو تبدیلی آجائے گی :عمران خان

اگر اپوزیشن جماعتوں اور قوم نے وزیراعظم کو احتساب کے لیے مجبور کردیا تو ...
اگر اپوزیشن جماعتوں اور قوم نے وزیراعظم کو احتساب کے لیے مجبور کردیا تو تبدیلی آجائے گی :عمران خان

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ پاناما لیکس کے انکشاف پر اگر اپوزیشن جماعتوں اور قوم نے مل کر وزیر اعظم کو احتساب کے لیے مجبور کردیا تو ملک میں تبدیلی آجائے گی اور تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی طاقتور کا احتساب ہو گا ۔ان کا کہنا ہے کہ جہانگیر ترین اور عمران خان کا بھی احتساب ہونا چاہیے لیکن پہلے وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے خاندان کا احتساب ہونا چاہیے ۔

لاہور میں میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ وزیر اعظم کے معاملے میں لمبی چوڑی انکوائری کی ضرورت نہیں ،صرف یہ دیکھنا ہے کہ جن پیسوں سے آف شور کمپنیاں خریدی گئیں ،وہ کیسے کمایا گیا اور باہر کیسے گیا ۔ انہوں نے استفسار کیا کہ وزیراعظم کے خاندان کے پاس مے فیئر میں فلیٹ لینے کے پیسے کہاں سے آئے ، نواز شریف نے الیکشن کمیشن سے جھوٹ کیوں بولا اور انہوں نے منی لانڈرنگ کیوں کی ۔عمران خان نے کہا کہ نواز شریف ان سوالوں کے جواب دینے کے بجائے ملک بھر میں ادھرادھر جا کر جلسے کر رہے ہیں اور نوجوانوں کو لیپ ٹاپس بانٹ رہے ہیں ،قوم جواب مانگ رہی ہے اور جواب لے کر ہی رہے گی ۔ان کا کہنا تھا کہ ساری جماعتوں فیصلہ کر بیٹھی ہیں پاناما لیکس میں سب سے پہلے ایک ہی کیس چلے گا جس میں شریف فیملی کا نام آیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سب کا احتساب ہونا چاہیے لیکن پہلے وزیر اعظم کااحتساب ہو گا ۔عمران خان نے کہا کہ راوئیونڈ جانے کی تیاری ہو رہی ہے اور ابھی اس سلسلے میں نیٹ پریکٹس کی جا رہی ہے ،امید ہے کہ ہمارے راوئیونڈ جانے سے پہلے ہی وزیراعظم خود کو احتساب کے لیے پیش کردیں گے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے پانچ ہزار ارب روپے کے قرضے لیے جو گزشتہ دس سالوں میں نہیں لیے گئے اور پاکستان میں روزانہ 10ارب روپے کی کرپشن ہو رہی ہے ۔عمران خان نے کہا کہ لیہ میں زہریلی مٹھائی کھانے سے لوگوں کو فوڈ پوائزننگ ہو گئی لیکن ہسپتالوں میں ان کے معدے صاف کرنے کے لیے ایکوپمنٹ نہیں تھا جس کے باعث وہ بچارے دم توڑ گئے ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -