محکمہ صحت ‘ مڈ وائف کی سروسز معطل ‘ بھاری فنڈز ‘ وسائل ضائع ہونیکا انکشاف

محکمہ صحت ‘ مڈ وائف کی سروسز معطل ‘ بھاری فنڈز ‘ وسائل ضائع ہونیکا انکشاف

  

ملتان(خبر نگار خصوصی) مڈوائف کی سروسز معطل ہونے سے محکمہ صحت کے بھاری فنڈز اور وسائل ضائع ہونے کا انکشاف ہواہے۔جبکہ ماں اور بچے کی صحت کا پروگرام اور مقررہ اہداف بھی بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔جس پر آئی آر ایم این سی ایچ اینڈ نیوٹریشن پروگرام پنجاب کے پروگرام ڈائریکٹر نے پاکستان نرسنگ کونسل کو تحفظات سے آگاہ کیا ہے۔اور کمیونٹی مڈوائف کی سروسز بحال کرنے (بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

کا مطالبہ کیا ہے۔پروگرام ڈائریکٹر نے پاکستان نرسنگ کونسل کو مراسلہ بھجوایا ہے جسمیں کہا گیا ہے کہ کمیونٹی مڈوائف کی سروسز پر پابندی کا نوٹیفیکشن واپس لیا جائے۔اس دوران نئی پالیسی اور سٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیجر(ایس او پی)بنائے جائیں۔مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ کمیونٹی مڈوائف پاکستان نرسنگ کونسل سے رجسٹرڈ جنرل پبلک ہیلتھ نرسنگ اینڈ مڈ وائفری سکولوں سے 24 ماہ کی ٹریننگ لیتی ہیں۔تاکہ محفوظ زچگی سروسز فراہم کر سکیں۔جس سے ماں اور بچے کی شرح اموات میں کمی لائی جاسکے۔انہیں زچگی کیسوں کے لئے خصوصی مہارت اور ٹریننگ دی جاتی ہے۔مگر پاکستان نرسنگ کونسل کی جانب سے کمیونٹی مڈوائف کی پریکٹس اور ادویات تجویز کرنے پر پابندی لگانے سے ماں اور بچے کی صحت کا پروگرام اور اسکے اہداف بری طرح متاثر ہورہے ہیں۔مراسلہ میں بتایا گیا ہے کہ پنجاب میں 25سو مڈوائف کام کر رہی ہیں اور متعلقہ علاقوں میں خدمات دے رہی ہیں۔آئی آر ایم این سی ایچ اینڈ نیوٹریشن پروگرام کے تحت بڑی رقم اور وسائل خرچ ہوتے ہیں جو ضائع ہو رہے ہیں۔

وسائل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -