وین حادثہ ‘ ایس ایچ او اقبال آباد معطل ‘ ری فلنگ ایجنسیوں کیخلاف آپریشن

وین حادثہ ‘ ایس ایچ او اقبال آباد معطل ‘ ری فلنگ ایجنسیوں کیخلاف آپریشن

رحیم یارخان(بیورورپورٹ)سکول کے بچوں سے بھری وین جس میں ایم ٹی بی سکول کے تین حقیقی بہن بھائی خدیجہ شبیر ، احمد شبیر ، عبداللہ شبیر جو کہ عبداللہ پور کے رہائشی ہےں بھی سوار تھے کہ تاج گڑھ کے نزدیک پابندی کے باوجود لگے ہوئے وین سلنڈر میں ایل پی جی گیس کے ختم ہوجانے پر ڈرائیور نے بوتل میں موجود پیٹرول کے ذریعے گاڑی کو سٹارٹ کرنے کی کوشش کی جس کے دوران آگ بھڑک اٹھی ۔ جس(بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

 نے دیکھتے ہی دیکھتے سکول وین کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی ضلعی افسران میں بھگدڑ مچ گئی ۔ ڈپٹی کمشنر ، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ، سیکرٹری آرٹی اے کے علاوہ دیگر افسران موقع پر پہنچ گئے ۔ تاہم ریسکیو کے عملہ نے سکول وین میں بھڑکنے والی آگ پر قابو پالیا اور جھلس کر زخمی ہونیوالے تینوں حقیقی بہن بھائیوں کو فوری طور پر طبی امداد کیلئے شیخ زاید ہسپتال منتقل کردیا گیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے ۔ دریں اثناءڈپٹی کمشنر اور ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کی نگرانی میں غیر قانونی طور پر قائم کی جانیوالی پیٹرولیم و ایل پی جی ایجنسیوں کیخلاف کریک ڈاﺅن شروع کردیا گیا جس میں 50سے زائد گیس سلنڈر قبضہ میں لے کر دو ایجنسی مالکان کو بھی گرفتار کرلیا گیا ۔ جبکہ ایس ایچ او اقبال آباد کی جانب سے واقعے کی اطلاع افسران کو تاخیر سے دینے اور وین ڈرائیور کے موقع سے فرار ہوجانے پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے ایس ایچ او اقبال آباد کو فوری طور پر معطل کردیا ۔ بعد ازاں ڈسٹرکٹ پولیس افسر عمر سلامت نے شیخ زید ہسپتال میں زیر علاج تینوں حقیقی بہن بھائیوں خدیجہ شبیر ، احمد شبیر اور عبداللہ شبیر کی عیادت کی اور ہسپتال انتظامیہ کو بہترین طبی سہولتیں فراہم کرنے کی بھی ہدایت کی ۔ جبکہ اقبال آباد پولیس نے فرار ہوجانے والے وین ڈرائیور کیخلاف مقدمہ درج کر کے وین قبضے میں لینے کے بعد ڈرائیور کی تلاش شروع کردی ۔ 

دوڑیں

مزید : ملتان صفحہ آخر