حکومت واجب الادا 24ارب سبسڈی دے ورنہ یوٹیلٹی سٹورز بند کردینگے ،مالکان کا احتجاج کا اعلان

  حکومت واجب الادا 24ارب سبسڈی دے ورنہ یوٹیلٹی سٹورز بند کردینگے ،مالکان کا ...

  

لاہور(سٹی رپورٹر) یوٹیلٹی سٹورز مالکان نے گزشتہ سبسڈٹی کی مد میں واجب ادا رقم اور بیل آﺅٹ پیکج نہ ملنے پرحکومت کے خلاف یکم مئی سے پارلیمنٹ ہاﺅس کے باہر احتجاج کا اعلان کیا ہے۔یوٹیلٹی سٹورز مالکان کے مطابق نئی سبسڈی کے اعلان سے پہلے گزشتہ سبسڈی کی مد میں 22سے24ارب روپے کی ادائیگی کی جائے۔حکومت نے کھانے پینے کی جن اشیاءپر ر مضان المبارک کی مناسبت سے سبسڈی دی ہے، رمضان سے قبل ان یوٹیلٹی سٹورز کا یہ حال ہے کہ وہاں بنیادی خوراک کی اشیاءہی دستیاب نہیں۔ روزنامہ پاکستان کی جانب سے کئے گئے سروے میں آل پاکستان وزکرز یونین آف سی بی اے کے جوائنٹ سیکرٹری محمد الیاس منہاس نے کہا رمضان المبارک کی مناسبت سے جن اشیاءپر سبسڈی کا اعلان کیا ہے ،عوام وہ اشیاءڈھونڈتے ہی رہیں گے، دکھائی نہیں دیں گی کیونکہ یوٹیلٹی سٹورز میں سبسڈی دی جانیوالی اشیاءکے ذخائرہی موجود نہیں۔ حکومت نے سٹاک کا ابھی تک کوئی بندوبست نہیں کیا اورآئندہ کیلئے سبسڈی کا اعلان بھی کردیا گیا ہے حالانکہ گزشتہ سبسڈٹی کی مد میں واجب ادا رقم کی نہیں دی گئی۔ جن چیزوں پر یہ سبسڈٹی دی جانی ہے وہ ہمارے پاس ہیں ہی نہیں تو سبسڈی کیسی؟ حکومت کے دہرے معیار کا یہ عالم ہے کہ صرف صوبہ پنجاب میں رمضان بازار کی مد میں 9ارب کی سبسڈٹی دینے کا اعلان کیا ہے ۔اگر حکومت ہمیں واجب ادا رقم اور 14ارب روپے کا بیل آﺅٹ پیکج فراہم کرے تو ہم یہ تو ٹیلٹی سٹورز دوبارہ بحال کر سکتے ہیں ۔ اس دفعہ حکومت کی باتوں میں نہیں آئیں گے اور حکومت سے اپنے مطالبات تسلیم کروا کر ہی احتجاج ختم کریں گے ۔

یوٹیلٹی سٹورز

مزید :

علاقائی -