10لاکھ لوگ بے ر وزگار،تاجر نیب سے ڈرتا سرمایہ کاری نہیں کررہا،مصطفی کمال

10لاکھ لوگ بے ر وزگار،تاجر نیب سے ڈرتا سرمایہ کاری نہیں کررہا،مصطفی کمال

  

کوئٹہ (این این آئی) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ حکومت عوام کو ریلیف فراہم کرنے میں یکسر ناکام ہوچکی ہے، فیڈرل بورڈ آف ریونیو کا ٹیکس خسارہ 800ارب روپے تک پہنچ گیا ہے، 18ویں ترمیم کے مخالف نہیں تاہم مسائل کے حل کے لئے اختیارات نچلی سطح تک منتقل کرنے کی ضرورت ہے، عوام کو بنیا دی سہولیات دیں لوگ پہاڑوں پر اور دشمن ایجنسیوں کے پاس نہیں جائیں گے، ملک میں نظام یکسر تبدیل کرنے کی ضرورت ہے صدارتی نظام کی حمایت نہیں کر رہا، ملک کے تمام تاجر نیب کے ڈر سے سرمایہ کاری سے گریز کررہے ہیں، حکومت نے 10لاکھ لوگوں کو بے روزگار کردیا گیاہے 400صنعتیں بند ہونے جارہی ہیں متحدہ قومی موومنٹ 30ہزار لوگوں کو قربان کرنے کے باوجود بلدیاتی اختیارات لینے اور اپنی 11سیٹیں جیتنے میں ناکام ہوچکی ہے،یہ بات انہوں نے ہفتہ کو کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی۔لاپتہ افراد کا معاملہ بھی سنگین ہے ریاست کو چاہیے کہ وہ لاپتہ افراد کو موقع دیکر انہیں اپنی ماؤں کے پاس بھیجے،انہوں نے کہا کہ کوئی بھی خوشی سے ہتھیار نہیں اٹھاتا آخر ہم کب تک لڑیں گے پاکستان کے تمام بارڈ اس وقت ایکٹو ہیں بھارت، افغانستان، ایران سے ہمارے تعلقات ٹھیک نہیں ہیں افواج پاکستان تمام سرحدوں پر مصروف ہیں بھارت نے ہمسایہ ممالک میں ہمارے خلاف سرمایہ کاری کی ہوئی ہے،ان تمام مسائل کی جڑ بھوک افلاس،بے روز گاری اور اختیارات کا نچلی سطح منتقل نہ ہونا ہے،ملک کے حالات ٹھیک کرنے کے لئے اختیارات نچلی سطح تک منتقل کرنے کی ضرور ت ہے اس سے لوگوں میں شمولیت اور ملکیت کا احسا س پیدا ہوگا انہوں نے کہا کہ آئین و جمہوریت کو ہمیشہ ذاتی مفاد کے لئے استعمال کیا جاتا رہا ہے لیکن جولوگ آئین کے آرٹیکل 8سے 25تک عوام کو بنیادی حقوق نہیں دیتے ان پر کبھی بھی آرٹیکل چھ نہیں لگا۔

مصطفی کمال

مزید :

صفحہ آخر -