حکمران خود چلے جائیں ورنہ آخری جنگ کیلئے تیار ہو جائیں: فضل الرحمن 

حکمران خود چلے جائیں ورنہ آخری جنگ کیلئے تیار ہو جائیں: فضل الرحمن 

چنیوٹ، چناب نگر(نمائندہ پاکستان،نامہ نگار) موجودہ حکومت مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اور صدارتی نظام آمریت کی علامت ہے، ہم اسلام آباد کی سڑکوں پر اس حکومتکیخلافآئیں گئے،موجودہ حکومت نے ہماری اسلامی شناخت کوختم کرنے کی کوشش کی ہے اور پاکستان کی معیشت کو کمزور کر دیا ہے اورہمارے اردگرد دشمن پیدا کردیے ہیں، ان خیالات کا اظہار امیر جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمن نے چنیوٹ آمد پر میڈیا سے گفتگوکے دوران کیا انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت کی پالیسیوں نے ریاست کو خطرے میں ڈال دیا ہے، صدارتی نظام آمریت کی علامت ہے، جیسی کوئی بھی سیاسی پارٹی قبول نہیں کرے گی،صدارتی نظام پاکستان کے آئین کو ختم کرنے کے مترادف ہو گا،انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف   نے ملک میں غیر سنجیدگی اور بے حیائی پیدا کی ہے،تحریک    انصاف  نے ہمارے ملک کی سیاست کے وقار کا جنازہ نکالا ہے،اس وقت مہنگائی کیخلافہماری ہی جماعت میدان میں ہے، ہم نے گیارہ ملین مارچ کیے ہیں ہرملین مارچ میں ملکی معیشت،مہنگائی اور عوام کے حق کی بات کی ہے،حکومت کی وزارتیں تبدیل کرنے سے حکومت کی سے اپنی ناکامی کا واضح اعترافہے جبکہ مولانا فضل الرحمن نے مرکز ختم نبوت چناب نگر میں ختم نبوت کورس کے دوران بہت بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لیے ہر مسلمان کو ختم نبوت کا کورس کروانا وقت کی اہم ضرورت ہے جب تک مسلمانوں کے دلوں میں قرآن مجید کی تعلیم ہے ہمارے عزائم ناکام ہوتے رہینگے جس کے لیے مختلف این جی او ز کام کر رہی ہیں ہمارے نصاب تعلیم پر حملے کیئے جا رہے ہیں کبھی پارلیمنٹ میں ناموس رسالت ؐ  کے قانون کو چھیڑا جا تا ہے مسلمانوں کی زندگی میں دین اسلام کو نکالنے کے لیے اہدافدیئے جاتے ہیں دین مدارس کے کردار کو ختم کرنے کے لیے کام کیا جاتا ہے دین اسلام کی بقاء عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ میں ہے جو قیامت تک رہے گی مگر انگریز نے قادیانی فتنہ کھڑا کر کر دیا جب انسان کے دل سے عقیدہ ختم ہو جائے گا تو آزادی بھی چھین لی جائے گی پاکستان کی پارلیمنٹ میں قادیانیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دیا مگر موجودہ حکومت کے آتے ہی قادیانی نیٹ ورک عروج پر ہو گیا ناموس رسالت ؐ  کے مرتکب کو جس طرح بری کیا گیا وہ لمحہ فکریہ ہے ریاست مدینہ کے دعوے قوم سے مذاق ہے کوئی حکمران ابھی تک ملکی تاریخ میں اتنے مختصر عرصہ میں ناکام نہیں ہوا جتنے موجودہ حکمران اب ناکام ہوئے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے ایجنڈے کو ناکام بنائیں گے گیارہ ملین مارچ ختم نبوت کے کر چکے ہیں اب بڑے بڑے جلسے کریں گے حکمران خود ہی چلے جائیں ورنہ اسلام آباد میں آخری جنگ کے لیے تیار ہو جائیں ساری دنیا جانتی ہے کہ امریکہ کادباؤ ہے مگر کفریہ ایجنڈے ملک میں کامیاب نہیں ہونے دینگے  ا

مزید : صفحہ اول