کراچی، 9ماہ کی نشوا کے بعد ایک اور بچہ ڈاکٹروں کی غفلت کی بھینٹ چڑھ گیا

کراچی، 9ماہ کی نشوا کے بعد ایک اور بچہ ڈاکٹروں کی غفلت کی بھینٹ چڑھ گیا
کراچی، 9ماہ کی نشوا کے بعد ایک اور بچہ ڈاکٹروں کی غفلت کی بھینٹ چڑھ گیا

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)کراچی میں ڈاکٹروں کی غفلت سے ایک اور کمسن جان چلی گئی ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 3 ماہ کے حنین کو سینے کی تکلیف کے باعث ملیر کے نجی ہسپتال لایا گیا تھا جہاں ڈاکٹر نے بچے کو خون کی بوتل لگا دی ،بچے کے والد ارشد جوکھیو کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر نے بچے کی آنکھ پر مرہم لگانے کیلئے دیا جس کے لگاتے ہی بچے کی آنکھیں کھولنے کی سکت ختم ہو گئی ،بچے کو طبیعت بگڑنے پر دوسرے ہسپتال لے جایا گیا مگر وہ راستے میں ہی دم توڑ دیا۔

بچے کی موت پر والدین غم سے نڈھال ہے اور ہسپتال انتظامیہ کیخلاف سراپا احتجاج ہیں، بچے کے والدارشد جوکھیو نے کہا کہ ہسپتال انتظامیہ اور ڈاکٹر کی غفلت اور غلط علاج کی وجہ سے میرے بچے کی جان چلی گئی،انہوں نے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ ہسپتال انتظامیہ اور ڈاکٹرز کیخلاف فوری کاررروائی کی جائے اور انہیں قرارواقعی سزا دی جائے۔

واضح رہے کہ چند روز بھی ڈاکٹروں کی غفلت کی وجہ سے 9ماہ کی نشوا جاں بحق ہو گئی جہاں نرس نے بچی کو غلط انجکشن لگا دیا تھا جس سے بچی کومہ میں چلی گئی تھی اور نجی ہسپتال میں زیر علاج رہنے کے بعد چل بسی تھی۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -