”سندھی کہاں جائیں گے“، ایاز امیر نے ایم کیوایم کے مطالبے پر سوال اٹھا دیا

”سندھی کہاں جائیں گے“، ایاز امیر نے ایم کیوایم کے مطالبے پر سوال اٹھا دیا
”سندھی کہاں جائیں گے“، ایاز امیر نے ایم کیوایم کے مطالبے پر سوال اٹھا دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)تجزیہ کار ایاز امیر نے کہاہے کہ ایم کیوایم کا نعرہ سن کر میرا دل دہل گیا ہے ، ایم کیو ایم کی حیثیت کم ہوگئی لیکن ان کے دل سے شر نہیں گیا، ایم کیو ایم چاہے گی کہ سندھ میں تقسیم ہو،حیدر آباد اور کراچی الگ صوبہ بنے جس میں ان کاغلبہ ہو ، اگر وہ یہ کرلیں گے تو سندھی کہاں جائیں گے۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”تھنک ٹینک“میں گفتگو کرتے ہوئے ایاز امیرنے کہا کہ ایم کیوایم کا نعرہ سن کر میرا دل دہل گیا ہے ، سندھ کی سرزمین نے ان کو جگہ دی ، ان کو پنا دی ، ان کوسپیس دی ، کراچی شہر نے اپنے آپ کو ان کیلئے کھول دیا اور کراچی سندھی شہر نہ رہا اور اس کی نوعیت بدل گئی ۔ انہوں نے کہا کہ جب ایم کیو ایم کو آگے چڑھایا گیا تو ایم کیو ایم نے کراچی کواپنی ریاست بنا لیا ، میڈیا پر اتنا زور کبھی مارشل لاءکا نہیں آیا جتنا ایم کیو ایم کا تھا ، ان کے نازو نخرے اٹھائے گئے ، پھر آپریشن ہوا اور ایم کیو ایم کی حیثیت کم ہوگئی لیکن ان کے دل سے شر نہیں گیا ، اس نعرے میں جوشر ہے کہ ”تقسیم کریں ، آدھا تمہار ا آدھا ہمارا ، ایسے ہوگا گزارہ“وہ شر نہیں گیا ۔

ان کا کہناتھا کہ ایم کیو ایم چاہے گی کہ سندھ میں تقسیم ہو،حیدر آباد اور کراچی الگ صوبہ بنے جس میں ان کاغلبہ ہو ، اگر وہ یہ کرلیں گے تو سندھی کہاں جائیں گے جن کی یہ سرزمین ہے ، ایک تو وہ اپنے دروازے آپ کیلئے کھولیں اوردوسرا آپ ان کی سرزمین کو تقسیم کردیں، یہ پنجاب اورکے پی میں تو ہوسکتاہے لیکن سندھ میں یہ نہیں ہوسکتا ۔

مزید :

قومی -