سلمان غنی نے وزیر اعظم کے دورہ چین کی سب سے بڑی خصوصیت بیان کردی

سلمان غنی نے وزیر اعظم کے دورہ چین کی سب سے بڑی خصوصیت بیان کردی
سلمان غنی نے وزیر اعظم کے دورہ چین کی سب سے بڑی خصوصیت بیان کردی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار سلمان غنی نے کہاہے کہ وزیراعظم کے دورہ چین کی سب سے بڑی خصوصیت یہ ہے کہ وزیر اعظم نے وہاں چار خطاب کئے ہیں اور ان میں سنجیدگی تھی ، اس سے قبل یہ نہیں تھا ، اس سے پاک چین روابط مضبوط ہوئے ہیں۔

جیونیوز کے پروگرام ”تھنک ٹینک“میں گفتگو کرتے ہوئے سلمان غنی نے کہا کہ نئے صوبوں کی تشکیل کوئی گناہ نہیں ہے ، پاکستان کا اصل مسئلہ گورننس ہے ، تمام سیاسی جماعتیں گورننس کی بات کرتی ہیں لیکن جب حکومت میں آتی ہیں تو ان کی ترجیحات بدل جاتی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ بات درست ہے کہ ایم کیوایم کے پاس کراچی کا مینڈیٹ نہیں ہے لیکن کبھی اس ملک کے وزیر اعظم نائن زیرو پر ہاتھ باندھ کرکھڑے ہوتے تھے ، کبھی یہ وزارتوں سے نکل جاتے تھے اور کبھی واپس آجاتے تھے ۔

انہوں نے کہا کہ آدھا تمہارا اور آدھاہمار ایہ شرارت ہے ، بھئی تمہارے پاس ہے کیاہے ؟ یہ ایک پیغام دینے کی کوشش کررہے ہیں کہ ہم پھر یہاں کردار ادا کررہے ہیں ، ایم کیو ایم لندن اور ایم کیو ایم پاکستان ایک ہی ہے ، متوسط طبقے کے لوگوں نے بھتہ اور بوری بند لاشیں متعارف کروائیں ۔ان کا کہنا تھا کہ اس معاملے پر تحریک انصاف اوردیگر سیاسی جماعتوں کو بھی بات کر نی چاہئے ، صوبوں کی تشکیل انتظامی بنیادوں پر ہونی چاہئے ، لسانی اور رنگ ونسل کی بنیاد پر نہیں ہونی چاہئے ۔وزیراعظم کے دورہ چین کی سب سے بڑی خصوصیت یہ ہے کہ وزیر اعظم نے وہاں چار خطاب کئے ہیں اور ان میں سنجیدگی تھی ، اس سے قبل یہ نہیں تھا ، اس سے پاک چین روابط مضبوط ہوئے ہیں ۔

مزید :

قومی -