18ویں ترمیم کی بنیاد بدنیتی پر رکھی گئی تھی، خاور گھمن کی رائے

18ویں ترمیم کی بنیاد بدنیتی پر رکھی گئی تھی، خاور گھمن کی رائے
18ویں ترمیم کی بنیاد بدنیتی پر رکھی گئی تھی، خاور گھمن کی رائے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)صحافی خاور گھمن نے کہاہے کہ اس وقت گورننس کا ایشو ہے ، پلو ں کے نیچے سے بہت سا پانی بہہ چکاہے ،18ویں ترمیم کی بنیاد بدنیتی پر رکھی گئی تھی اوراس کی وجہ یہ تھی کہ نئی نئی جمہوریت آئی تھی۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”تھنک ٹینک“میں گفتگو کرتے ہوئے خاور گھمن نے کہا کہ اس وقت گورننس کا ایشو ہے ، پلو ں کے نیچے سے بہت سا پانی بہہ چکاہے ، کراچی کی اب وہ صورتحال نہیں رہی ہے ، دنیا میں کوئی ایسا صوبہ نہیں جس طرح پنجاب ہے جس کی آبادی ملک کا 51فیصد ہے ، اس سے چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ 18ویں ترمیم کی بنیاد بدنیتی پر رکھی گئی تھی اوراس کی وجہ یہ تھی کہ نئی نئی جمہوریت آئی تھی ۔انہوں نے کہا کہ اس وقت چائنہ بھارت کی تجارت کاحجم نوے ارب ڈالر تک پہنچ گیاہے جس کو وہ سو ارب ڈالر تک لیکرجانا چاہتے ہیں لیکن ہمارے پاس بیچنے کیلئے ہے کیا ؟ہمیں اپنے وسائل کو یوٹیلائز کرنا چاہئے ۔

مزید :

قومی -