صدارتی نظام کا شوق پورا کرنے کیلئے آئین کو ختم کرنا پڑے گا ،کسی میں طاقت ہے تو آئین ختم کردے:سید خورشید شاہ

 صدارتی نظام کا شوق پورا کرنے کیلئے آئین کو ختم کرنا پڑے گا ،کسی میں طاقت ہے ...
 صدارتی نظام کا شوق پورا کرنے کیلئے آئین کو ختم کرنا پڑے گا ،کسی میں طاقت ہے تو آئین ختم کردے:سید خورشید شاہ

  

سکھر(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر  رہنمااور قومی اسمبلی میں سابق اپوزیشن لیڈر سیدخورشید احمد   شاہ نے کہاہے کہ ایم کیو ایم کی الگ صوبے کی قرار داد سے کوئی فرق نہیں پڑے گا ، طاقت ہے تو وہ قرار داد  منظور کرکے دکھائیں، صدارتی نظام کا شوق پورا کرنے کیلئے آئین کو ختم کرنا پڑے گا۔

نجی ٹی وی کے مطابق سکھر سول ہسپتال کے دورے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سید خورشید احمد شاہ نے کہا کہآئین میں صدارتی نظام کی کوئی گنجائش نہیں ہے،صدارتی نظام کا شوق رکھنے والے اپنا شوق پورا کرلیں ،مگر اس کے لیے انہیں آئین ختم کرنا پڑے گا،کسی میں طاقت ہے تو آئین کو ختم کردے۔ ان کا کہنا تھا کہ نیب قوانین میں ترامیم کی راہ میں اپوزیشن رکاوٹ نہیں ہے، نیب قوانین میں ایسی ترامیم  چاہتے ہیں جو آئین و قانون سے متصادم نہ ہوں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم پارلیمنٹ میں احتجاج کررہے ہیں اور احتجاج کا مطلب یہ نہیں ہوتا کہ سڑکوں پر آکر پتھراؤ کریں، ہنگامہ آرائی کریں ، اگر پانی سر سے گذر گیا تو پھر تنگ آمد بجنگ آمد ہوگی۔سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہوفاق نے سندھ کو فنڈز کم دیئے ہیں جس کی وجہ سے صوبہ کی ترقی رک گئی ہے،اس سال وفاق نے سندھ کو  120 

 ارب روپے  کم دیے، چیف منسٹر بھی پیسے کم ملنے پر احتجاج کر رہے ہیں ساتھ ہی وفاق کی جانب سے پنجاب اور خیبرپختونخوا کو بھی پیسے کم ملے۔

مزید : قومی