بھارت میں مسلمانوں کو تعصب کا سامنا ہے،الطاف شاہد

بھارت میں مسلمانوں کو تعصب کا سامنا ہے،الطاف شاہد

  

لاہور(پ ر)پاک سر زمین پارٹی برطانیہ کے صدرچوہدری محمد الطاف شاہد نے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں کونفرت،تعصب اورتشددکاسامنا ہے۔بھارتی مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک پرمسلم حکمران خاموش کیوں ہیں۔

،ان کی خاموشی میں کیامصلحت ہے۔ مودی سرکار کے آشیرباد سے انتہاپسندہندو کروناوباکی آڑ میں مسلمانوں کودیوار کے ساتھ لگا رہے ہیں،بھارت کے زیادہ ترشہروں میں مسلمانوں کونماز اداکرنے کیلئے مساجدجانے اورپانچ وقت اذان دینے کی اجازت نہیں،انہیں ماہ رمضان میں سحری اورافطاری کے اوقات میں شدید مشکلات پیش آرہی ہیں۔وہ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ چوہدری محمدالطاف شاہد نے مزید کہا کہ بھارت کے زیادہ ترمسلمان ناخواندہ اور پسماندہ ہونے کے ساتھ ساتھ بنیادی حقوق سے پوری طرح محروم ہیں اوپرسے شدت پسند ہندوحکومت کے دباؤپر ان کامعاشی استحصال بدترین بربریت ہے،بھارتی میڈیا کے مخصوص لوگ بھی مسلسل مسلمانوں کیخلاف زہرا گل رہے ہیں۔مودی سرکار ہندوستان کومسلمانوں اورکشمیریوں کیلئے قبرستان بنانے کے درپے ہے۔انہوں نے کہا کہ مٹھی بھرپوش مسلمان خواہش اورکوشش کے باوجود انتہاپسندہندوؤں کے ڈر سے اپنے مستحق مسلمان بھائی بہنوں کی مدد تک نہیں کرسکتے۔اگرعالمی ضمیرزندہ ہے تو بھارت میں کروڑوں مسلمانوں کوہراساں کئے جانے کافوری نوٹس لے اوران کی خوداعتمادی بحال کرے۔ انہوں نے کہا کہ کروناوبا کے سبب یرغمال کشمیریوں کی دشواریاں دوگنا بڑھ گئی ہیں۔عالمی ضمیر اوردنیا کی مقتدرقوتوں کوبھارت میں پچھلی سات دہائیوں سے مسلمانوں کے ساتھ جاری انسانیت سوزسلوک نظرکیو ں نہیں آتا۔انہوں نے کہا کہ پی ایس پی کی قیادت بھارت میں مسلمانوں کی حقوق کی بازیابی تک خاموش نہیں رہے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -