اروی کی فصل پر دیمک کے حملہ کا خدشہہے، ماہرین

  اروی کی فصل پر دیمک کے حملہ کا خدشہہے، ماہرین

  

فیصل آباد(اے پی پی):ماہرین زراعت نے کہاہے کہ موسم گرما کی شدت میں بتدریج اضافہ کے ساتھ ہی اروی کی فصل پر دیمک کے حملہ کا خدشہ بڑھ جاتاہے لہٰذاکاشتکاروں کو چاہیے کہ وہ گوڈی کے دوران شگوفے توڑنے سمیت کلورپائریفاس کا سپرے بھی کریں تاکہ اروی کی پیداوار کو نقصان سے بچایاجاسکے۔کاشتکاروں کے نام پیغام میں انہوں نے کہا کہ اروی کے کاشتکار فصل کی آبپاشی کی جانب بھی خصوصی توجہ دیں اور ہر 6سے7دن کے وقفہ کے بعد فصل کی آبپاشی یقینی بنائی جائے۔ انہوں نے کہاکہ کاشتکار جڑی بوٹیوں کے خاتمہ کیلئے بھی بروقت اقدام کریں اور خود رو پودوں کو ختم کرنے کیلئے رواں ماہ کے دوران کم از کم تین مرتبہ فصل کی گوڈی کی جائے۔ انہوں نے کہاکہ اگر پودوں کی بغل میں موجود شگوفے گوڈی کے دوران ختم نہ کئے گئے تو وہ کچالو کی شکل اختیارکرلیتے ہیں جس سے اروی کی پیداوار کو نقصان پہنچتاہے۔انہوں نے کہاکہ جب اروی کے پودے 30سے 50 سینٹی میٹرتک اونچے ہو جائیں تو کھیت کی ذرخیزی کو مد نظر رکھتے ہوئے دو سے تین اقساط میں 2بوری فی ایکڑ یوریااور 4بوری امونیم نائٹریٹ ڈال دی جائے۔ انہوں نے کہاکہ اس ضمن میں مزید رہنمائی کیلئے ماہرین زراعت یامحکمہ زراعت توسیع و پیسٹ وارننگ کے عملہ کی خدمات سے بھی استفادہ کیاجاسکتاہے۔

مزید :

کامرس -