سندھ کابینہ نے اسکول فیس، یوٹیلیٹی بلز اور کرایوں میں رعایت کی منظوری دے دی

سندھ کابینہ نے اسکول فیس، یوٹیلیٹی بلز اور کرایوں میں رعایت کی منظوری دے دی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ کابینہ نے اسکول فیس، یوٹیلٹی بلز اور کرایوں میں رعایت کی اصولی منظوری دیتے ہوئے احساس کفالت پروگرام پر ٹیکس معاف کردیا اور کہاہے کہ پروگرام کیلئے بینکوں سے جاری رقوم پر سندھ ریونیو بورڈ کا ٹیکس نہیں لیا جائے گا جبکہ دفعہ144کے اختیارات کمشنرز کو سونپ دیئے ہیں۔پیرکووزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس ہوا، جس میں کوروناوائرس کی صورتحال پربریفنگ دی گئی اور کورونا سے انتقال کرنے والے افراد کیلئے دعائے مغفرت کی گئی۔سندھ کابینہ میں کورونا کے مریضوں کی جلد صحت یابی کیلئے بھی دعا کی اور کورونا کے پھیلنے کے افسوس میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی۔سندھ کابینہ نے احساس کفالت پروگرام پرٹیکس معاف کردیا اور کہا پروگرام کیلئے بینکوں سے جاری رقوم پر سندھ ریونیو بورڈ کا ٹیکس نہیں لیا جائے گا جبکہ کابینہ نے نجی اسکولوں کی فیس میں 20فیصدکمی کی منظوری بھی دے دی، نجی اسکولوں کی فیسوں میں کمی کااطلاق اپریل اورمئی میں ہوگا۔کابینہ نے ایڈووکیٹ جنرل کو ہدایت کی کہ فیصلے سے سندھ ہائی کورٹ کو آگاہ کیا جائے، سندھ ہائی کورٹ کو بتایا جائے کابینہ نے فیصلہ عوامی مفاد میں کیا ہے۔سندھ کابینہ نے احساس کفالت پروگرام کے تحت ادائیگی پر ملنے والی کمیشن پر ایس بی آر ٹیکس بھی معاف کردیا۔ ترجمان وزیراعلی سندھ نے کہا کہ اس معافی کا اطلاق صرف متعلقہ بینکنگ ایجنٹس کو ملنے والی کمیشن پر ہوگا۔کابینہ نے سندھ کووڈ ایمرجنسی ریلیف آرڈیننس 2020 کی منظوری دیتے ہوئے گورنر کو بھیج دیا۔ آرڈیننس میں اسکول فیس میں 20 فیصد کمی کی گئی ہے، جبکہ بجلی، پانی، گیس کے بلوں اور رہائشی کرایوں میں رعایت کی منظوری بھی دی گئی ہے۔سندھ کابینہ نے ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی پر جرمانے بڑھانے کی تجویز دیتے ہوئے کہا کہ اوور اسپیڈنگ پر موٹرسائیکلز کیلیے جرمانہ 500 روپے، لائٹ وہیکل کیلیے ہزار اور بڑی گاڑیوں پر 1500 روپے، پبلک ٹرانسپورٹ میں زائد مسافر بٹھانے پر جرمانہ 300روپے سے بڑھاکر ایک ہزار روپے، اوور ٹیکنگ کا جرمانہ 300روپے سے بڑھا کر دو ہزار تک کرنے کی تجاویز بھی دے دیں۔وزیر اعلی نے محکمہ ٹرانسپورٹ کو اس حوالے سے متعلق افراد سے مشاورت کی ہدایت کردی۔سندھ کابینہ نے دفعہ144 کے اختیارات کمشنرز کو سونپ دیے، کمشنرز کو اختیارات کورونا سے متعلق احتیاطی تدابیر کیلئے دیے گئے ہیں۔وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے بتایا کہ پیرکو2733ٹیسٹ کیے گئے، کل تعداد43949 ہوگئی جبکہ341 نئے کیسز سامنے آئے اور مزید 4کورونا مریض انتقال کرگئے، جس کے بعد اموات کی تعداد85 ہوگئی۔مراد علی شاہ نے کہا کہ 3946 مریض زیرعلاج ہیں جن میں 24کی صورتحال خراب ہے اور 16 مریضوں کو وینٹی لیٹرز پر رکھا گیا ہے، 2705 مریض گھروں میں اور 825 مریض آئیسولیشن مراکزمیں زیرعلاج ہیں۔انہوں نے کہا کہ مریضوں میں اضافے کے باعث بستروں کی تعداد بڑھا رہیہیں، ایکسپو سینٹر میں 1200 سیبڑھاکر 1500بستر کرنے کا فیصلہ کیا، پی اے ایف میوزیم سائٹ پر600 اور گڈاپ اسپتال150بستر کا اضافہ کیا۔وزیراعلی سندھ نے مزید کہا کہ دمباگوٹھ اسپتال میں 120 بستروں کامرکزقائم کرنے اور 100 بستروں کا فیلڈ آئیسولیشن سینٹر ہر ضلع میں قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -