احساس کفالت پروگرام میں ریٹیلر ز کی لوٹ مار تیز‘ افسر غائب

احساس کفالت پروگرام میں ریٹیلر ز کی لوٹ مار تیز‘ افسر غائب

  

چوک پرمٹ (نمائندہ پاکستان)احساس کفالت پروگرام میں ریٹیلرز کی لوٹ مارتیز ہوگئی زونل ہیڈ راشد منیر ماہانہ تین ہزار روپے فی ڈیوائس لیکر رام شکایات کے باوجود کاروائی سے گریزاں ہیں تفصیل کے مطابق تحصیل جتوئی میں احساس کفالت پروگرام کے تحت ریٹیلرز کی لوٹ مار جاری ہے اور فی کس تین سو سے پانچ سو روپے وصولی کرنے کا انکشاف ہوا ہے(بقیہ نمبر36صفحہ6پر)

ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ کئی سالوں سیمختلف کمپنیوں کے ذریعے مستحقین تک امداد پہنچائی جا رہی تھی جس میں بے تحاشا کرپشن دیکھنے میں آئی اور گورنمنٹ نے کیش ڈسٹری بیوشن کیلئے حبیب بنک سے رابطہ کیا اور ایچ بی ایل کنٹیکٹ شاپس کے ذریعے رقوم کی تقسیم کا سلسلہ شروع کیا جس کے تحت جتوئی میں 40 سے زائد ریٹیلرز کے ذریعے یہ شاپس اوپن کی گئیں جبکہ پرانے ریٹیلرز نے بھی دوبارہ لوٹ مار شروع کردی ہے جسکی واضح مثال گزشتہ دنوں میر ہزار خان میں ساجد شیخ اور صغیر کے علاوہ میرہزار کے ریٹیلر ارشد کے خلاف اسسٹنٹ ڈائریکٹر بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام راشد لغاری کی مدعیت میں مقدمات بھی درج کئے گئے اور ان پر خواتین سے پیسے لینا ثابت ہو گیا مگر اگلے ہی دن انہوں نے ضمانت کرا کے دو بارہ کام شروع کر دیا جبکہ میر ہزار خان میں ہاشم شیخ عرصہ دراز سے بطور ریٹیلر کام کر رہا ہے اور سرعام عوام سے پیسے لیتا ہے اور اس لوٹ مار سے لاکھوں روپے مالیت کی گاڑی خرید کی گئی اور کوٹھی تعمیر کرائی گئی ہے جبکہ چند سال قبل ہاشم شیخ کے پاس کی مالی حالت بہت کمزور تھی مگر آج غریب نادرا افراد کو لوٹ کر لکھ پتی بن چکا ہے ذرائع نے انکشاف کیا کہ ان ریٹیلرز کے پیچھے بااثر سیاسی شخصیات کے علاوہ بیوروکریسی میں موجود افسران بھی پشت پناہی کرتے ہیں اس لئے ہاشم شیخ کی بجائے اسکے بھائی سا جد شیخ کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھاحالانکہ احساس پروگرام کی ہیڈ ثانیہ نشتر نے اعلان کیا تھا کہ جو ریٹیلر پیسے لے گئے اس پر جرمانہ اور قید کی سزا ہو گی اور ڈیوئس واپس لے کر بلیک لسٹ کیا جائیگا جس پر عوامی وسماجی حلقوں کے نمائندگان نے تشویش کا اظہار کیا۔

افسر غائب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -