مقبوضہ کشمیر، بانڈی پورہ میں طوفان سے متاثرہ خاندان امداد کے منتظر

مقبوضہ کشمیر، بانڈی پورہ میں طوفان سے متاثرہ خاندان امداد کے منتظر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سرینگر(آ ئی اےن پی ) مقبوضہ کشمےر مےں قہر انگیز آندھی اور طوفان سے متاثرہ شمالی ضلع بانڈی پورہ کے بے حال کنبے 6ماہ گذرنے کے باوجود سرکاری امداد کے منتظر ہیںجبکہ شمالی ضلع کے 2ہزار سے زیادہ ایسے کنبوں کو بھی اج تک کوئی معاوضہ نہیں دیا گیا۔ مےڈ ےا رپورٹس کے مطابق رواں سال ماہ اپریل میں شمالی کشمیر کے کئی علاقوں میں قہر انگیز آندھی اور طوفان نے تباہی مچادی تھی جبکہ اس قدرتی آفت کے نتیجے میں سینکڑوں کنبے گھر بار سے محروم ہوگئے تھے۔ متاثرین کے اعداد وشمار اور قہر انگیز اندھی کے نتیجے میں ہوئے نقصانات کا جائزہ لینے کیلئے ریاستی سرکار نے اعلیٰ افسروں پر مشتمل خصوصی کمیٹیاں تشکیل دی تھیں جبکہ وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کی ہدایت پر کئی وزراءنے شمالی ضلع بانڈی پورہ کے کئی متاثرہ دیہات کا خود دورہ کر کے صورتحال کا جائزہ بھی لیا تھا۔ بانڈی پورہ کے مختلف علاقوں میں 2500سے زیادہ رہائشی مکانات اور دیگر تعمیرات کو زبردست نقصان پہنچاتھا جبکہ سینکڑوںکی تعداد میں پھل دار اور دیگر درخت اکھڑ گئے تھے، سرکاری ٹیموں نے باضابطہ طور پر اپنی رپورٹ مرتب کی اور معلوم ہوا کہ ضلع انتظامیہ نے بانڈی پورہ میں ہوئے نقصانات کے بارے میں ریاستی سرکار کو بھی ایک رپورٹ روانہ کردی تھی لیکن رپورٹ کے باوجود اب تک ریاستی سرکار کی طرف سے بانڈی پورہ کے متاثرین کو کوئی معاوضہ یا معاونت فراہم نہیں کی گئی ہے جس کے باعث درجنوں کنبے اج بھی کھلے آسمان تلے یا مجبوراً اپنے رشتہ داروں کے ہاں مقیم ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -