جعلی لائسنس جاری کرنے پر سابق چیئرمین اوگرا کا سٹاف افسر گرفتار

جعلی لائسنس جاری کرنے پر سابق چیئرمین اوگرا کا سٹاف افسر گرفتار

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد (آئی این پی) قومی احتساب بیورو (نیب) نے سی این جی سٹیشنوں کیلئے جعلی لائسنس جاری کرنے پر سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق کے سٹاف افسر جواد جمیل کو بھی گرفتار کر لیا ، ممبر فنانس اوگرا میر کمال مری اور دیوان پٹرولیم کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد ضیاءالرحمن فاروقی کی گرفتاری کیلئے وارنٹ جاری کر دیئے ہیں۔پیر کو نیب کی طرف سے جاری کئے گئے اعلامیہ کے مطابق اوگرا سیکنڈل کے مرکزی کردار اور سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق سے کی جانے والی تحقیقات کی روشنی میں سی این جی سٹیشنوں کیلئے جعلی لائسنس کے اجراءپر ان کے سابق سٹاف افسر اور قریبی رشتہ دار جواد جمیل کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے اور ان سے پوچھ گچھ کا سلسلہ جاری ہے ۔اعلامیہ کے مطابق کرپشن کرنے پر اوگرا کے ممبر فنانس میر کمال مری اور دیوان پٹرولیم کے سی ای او محمد ضیاءالرحمن فاروقی کی گرفتاری کیلئے بھی وارنٹ جاری کر دیئے گئے ہیں اور اس کیلئے آئی جی اسلام آباد کو باضابطہ طور پر درخواست ارسال کر دی گئی ہے ۔واضح رہے کہ اس کیس میں اوگرا کے ممبر گیس منصور مظفر کو 16 مئی 2012ءکو گرفتار کیا گیا تھا ۔

مزید :

صفحہ آخر -