مجرمانہ ماضی کے حامل رکن پارلیمان حکومت میں شامل نہ کیے جائیں: بھارتی سپریم کورٹ

مجرمانہ ماضی کے حامل رکن پارلیمان حکومت میں شامل نہ کیے جائیں: بھارتی سپریم ...
مجرمانہ ماضی کے حامل رکن پارلیمان حکومت میں شامل نہ کیے جائیں: بھارتی سپریم کورٹ

  

نئی دہلی(ویب ڈیسک) بھارت کی ایک اعلی عدالت کے مطابق مجرمانہ ماضی رکھنے والے کسی بھی رکن پارلیمان کو حکومت میں شامل نہیں کیا جانا چاہیے۔ بھارتی سپریم کورٹ کے مطابق وزیراعظم نریندر مودی اپنی کابینہ کا انتخاب کرنے میں آزاد ہیں لیکن وزرا کے لیے انہیں ایسے ارکان کو منتخب کرنا چاہیے، جن کا ماضی مکمل طور پر شفاف ہو۔ سپریم کورٹ نے مزید کہا کہ اسے امید ہے کہ مودی عوامی توقعات کا احترام کرتے ہوئے جمہوری اقدار کی پاسداری کریں گے۔ جسٹس دیپک مشرا کا کہنا ہے کہ ہم یہ معاملہ وزیراعظم کی دانائی پر چھوڑتے ہیں کہ کیا وہ ایسے افراد کو وزیر بناتے ہیں جو جرائم پیشہ سرگرمیوں میں ملوث رہے ہیں؟،ان کا کہنا تھا کہ انہیں امیدہے کہ ایسے ارکان پارلیمان کو وزرا کی کمیٹیوں میں بھی شامل نہیں کیا جائے گا۔ جسٹس مشرا کے بقول وزیراعظم مودی سے ملکی آئین بھی یہ توقع کرتا ہے کہ وہ مجرمانہ ماضی رکھنے والے کسی بھی شخص کو حکومت کا حصہ بنانے بارے نہیں سوچیں گے۔یاد رہے کہ بھارت کی موجود کابینہ میں تیرہ وزرا ایسے ہیں، جنہیں سنگین نوعیت کے متعدد مقدمات کا سامنا ہے۔

مزید : بین الاقوامی