بھارتی اخبار نے فوجی تیاریوں کا پول کھول دیا، کارگل جنگ کے دوران اسرائیل مدد کو آیا

بھارتی اخبار نے فوجی تیاریوں کا پول کھول دیا، کارگل جنگ کے دوران اسرائیل مدد ...
بھارتی اخبار نے فوجی تیاریوں کا پول کھول دیا، کارگل جنگ کے دوران اسرائیل مدد کو آیا

  

نئی دہلی (ویب ڈیسک) بھارتی اخبار نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے ساتھ جنگ کی صورت میں بھارت کے پاس گولہ بارود کم پڑسکتا ہے،فوج کے پاس گولہ بارود کی بہت کمی ہے اورٹینک،ایئر ڈیفنس، اینٹی ٹینک گائیڈڈ میزائل، سپیشلائزیڈمیشن گن میگزینس، گرینیڈٹ اور مان فیوز جیسی چیزیں بھی کم ہیں ، مکمل طور پر جنگ چھڑ گئی تو ان میں سے کچھ چیزیں تو ایک ہفتے میں ہی ختم ہو جائیں گی۔ٹائمز آف انڈیا کے مطابق دنیا کی دوسری سب سے بڑی فوج کے پاس گولہ بارود کم ہونا بھارت کے لئے باعث تشویش ہے۔ 1999ءمیں کارگل کی لڑائی کے دوران بھارت کو ایمرجنسی میں اسرائیل سے گولہ بارود خریدنا پڑا تھا،جنگ کے حالات میں بھارتی فوج کا گولہ بارود کم پڑ سکتا ہے، اسلحہ ذخائر گولہ بارود کی شدید کمی سے دوچار ہیں اور جنگ ہوئی تو 20 دن کے اندر ہی بھارت کے پاس کوئی گولہ بارود نہیں بچے گا۔مارچ میں حالات کا جائزہ لیتے ہوئے ٹائمز آف انڈیا نے بتایا تھا کہ بھارت کے پاس وسیع جنگ کے حالات میں 20 دن کا ہی گولہ بارود بچا ہے، چھ ماہ گزر جانے کے بعد بھی حالات میں مزید بہتری نہیں ہوئی ہے،حکومت اس نازک صورتحال سے واقف ہے اور ضروری قدم بھی اٹھائے جا رہے ہیں۔ آرمی کے ایمینشن روڈ میپ کے مطابق 2019ءتک ہی بھارت کا وارویسٹیج ریزرو 100 فیصد پر پہنچ پائے گا اور اس کےلئے بھی 97 ہزار کروڑ کا بجٹ چاہیے۔ ایک اور فارمولے کے مطابق 23 طرح کے اسلحے بیرون ملک سے امپورٹ کرنے پڑیں گے جبکہ باقی اسلحہ آرڈیننس فیکٹریاں تیار کریں گی۔

مزید : بین الاقوامی