سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا مقدمہ وزراءسمیت21افرادکیخلاف درج

سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا مقدمہ وزراءسمیت21افرادکیخلاف درج
سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا مقدمہ وزراءسمیت21افرادکیخلاف درج

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پولیس نے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا مقدمہ تین وفاقی وزراءسمیت 21افرادکیخلاف درج کرلیاہے ۔ منہاج القرآن کے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن جوادحامد کی درخواست پر قتل ، اقدام قتل اور انسداددہشتگردی کی دفعات کے تحت درج کیاگیاجس کا نمبر 693/14ہے۔

باخبر ذرائع نے انکشاف کیاکہ ایس ایچ او تھانہ فیصل ٹاﺅن میں موجود نہیں تھے جس پر روزنامچہ ایک اعلیٰ افسر کے دفترمیں منگواکر روزنامچے میں رپورٹ درج کی گئی جبکہ اِس کے لیے پولیس نے نمبر693مختص کردیاہے اور امکان ظاہرکیاجارہاہے کہ مقدمہ درج کرکے ایف آئی آر سیل کردی جائے گی ۔

 اس سے قبل وفاقی و صوبائی حکومت کی طرف سے سانحہ ماڈل ٹاﺅن کا مقدمہ درج کرنے کا حکم پولیس کو موصول ہوا جس آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرانے موقف اپنایاکہ عدالتی حکم پر مقدمہ درج کیاجارہاہے اور وہی دفعات لگیں گی جو قانون کے مطابق بنتی ہیں ۔ دوسری طرف وفاقی حکومت نے حکم دیاتھاکہ لواحقین کی مرضی کے مطابق مقدمہ درج کیاجائے ۔

یادرہے کہ عدالتی حکم کے باوجود مقدمہ درج نہ ہونے پر توہین عدالت کی درخواست بھی دائر کی جاچکی ہے جبکہ شہادتوں کا مقدمہ درج نہ ہونے کیخلاف ڈاکٹرطاہرالقادری کی سربراہی میں 15اگست سے اسلام آباد میں دھرناجاری تھا۔سانحے کی تحقیقات کرنیوالے جوڈیشل کمیشن نے بھی بیریئرز کو قانونی قراردیتے ہوئے تاریخ کی سب سے بری خون کی ہولی قراردیدیا۔ دوسری طرف عدالت نے پولیس کی مدعیت میں درج کی گئی پہلی ایف آئی آر کے ملزموں کی گرفتاری کا حکم دیدیا۔خصوصی عدالت نے پولیس کو حکم دیاکہ ملزموں کو پانچ ستمبرتک گرفتارکرکے پیش کریں ۔

Last Update: 16:25

مزید : قومی /اہم خبریں