وہ جانور جس کی نسل صرف 2 ہفتوں میں آدھی رہ گئی کیونکہ۔۔۔

وہ جانور جس کی نسل صرف 2 ہفتوں میں آدھی رہ گئی کیونکہ۔۔۔
وہ جانور جس کی نسل صرف 2 ہفتوں میں آدھی رہ گئی کیونکہ۔۔۔

  

استانہ (نیوز ڈیسک) تھوتھنی والے نایاب سائگاہرن کی نسل پہلے ہی شکاریوں کے ہاتھوں خطرے کی شکار تھی مگر اب اس خوبصورت جانور پر ایک ایسی آفت ٹوٹ پڑی ہے کہ جس کی کسی کو سمجھ نہیں آرہی۔

قازقستان کے پہاڑوں میں اس ہرن کے غول کے غول اچانک موت کے شکار ہورہے ہیں اور ماہرین جنگلی حیات یہ دیکھ کر حیران رہ گئے ہیں کہ اکثر جگہوں پر ہزاروں ہرن اکٹھے مردہ پائے گئے ہیں۔ ماہرین کے مطابق 2 ہفتے سے بھی کم وقت میں تقریباً ڈیڑھ لاکھ سائگا ہرن مردہ پائے گئے ہیں۔

اس ہرن کی سب سے عجیب بات اس کی چھوٹی سی سونڈ ہے جسے یہ ہوا کو فلٹر کرنے کیلئے استعمال کرتا ہے۔ اس کے سینگ خصوصی طور پر شکاریوں کو اپنی طرف متوجہ کرتے ہیں۔ یہ سینگ مشرق بعید کے ممالک میں تقریباً 300 روپے فی گرام کے حساب سے بکتے ہیں اور انہیں مقامی روایتی ادویات میں استعمال کیا جاتا ہے۔ انہیں پیس کر ایک خصوصی مشروب بھی بنایا جاتا ہے جسے انتہائی ٹھنڈک کا ذریعہ قرار دیا جاتا ہے اور عموماً بخار کے مریضوں کو پلایا جاتاہے۔

اگرچہ چرنے والے جانوروں میں متعدی انفیکشن کی وجہ سے بڑی تعداد میں اموات کوئی نئی بات نہیں لیکن یہ ہرن جس طرح ہزاروں کے گروہوں کی صورت میں مررہے ہیں اس کی کوئی دوسری مثال نہیں ملتی۔ ماہرین تاحال اس پراسرار صورتحال کی وجہ کا پتہ نہیں چلاسکے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -