نواز حکومت اپنی کسان دشمن پالیسیاں تبدیل کرے،بلاول بھٹو زرداری

نواز حکومت اپنی کسان دشمن پالیسیاں تبدیل کرے،بلاول بھٹو زرداری

  

اسلام آباد(پ ر)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کسانوں کی حالت زار پر پاکستان مسلم لیگ(ن) کی جانب سے بے رخی برتنے پر سخت مذمت کی ہے اور پارٹی ورکروں سے کہا ہے کہ وہ کسانوں سے برتے جانے والے سوتیلی ماں جیسے سلوک پر عوامی رائے عامہ ہموار کریں تاکہ نواز حکومت اپنی کسان دشمن پالیسیاں تبدیل کرے۔ یہ بات انہوں نے اوکاڑہ اور پاک پتن کے پارٹی وفود سے ملاقات کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ نہ صرف اوکاڑہ اور پاک پتن بلکہ دوسرے اضلاع سے بھی آنے والے وفود سے کسانوں کی حالت زار پر بات کی اور مطالبہ کیاکہ صورتحال کی بہتری کے لئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے حکومت کو متنبہ کیا کہ کسانوں میں بددلی اور بے چینی پھیل رہی ہے جو ملک کی معیشت کے لئے برا شگون ہے ۔ پارٹی کے ترجمان سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ پارٹی چیئرمین نے پارٹی لیڈروں سے کہا ہے کہ وہ کسانوں سے ملاقات کرکے عوامی اجلاس منعقد کریں اور تمام فورموں بشمول پارلیمنٹ میں یہ مسئلہ اٹھائیں۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پارٹی کی حکومت نے اجناس کی اچھی قیمتیں مقرر کی تھیں اور ٹیوب ویل کے لئے بجلی فی یونٹ 8 روپے دے کر ملک کو گندم میں خودکفیل بنا دیا تھا جس سے ملکی معیشت بہت ہوئی تھی اور دیہاتی علاقوں میں لوگوں کی قوت خرید میں اضافہ ہوا تھا۔ انہوں نے چاول کے کاشتکاروں کے لئے سبسڈی دینے کا مطالبہ کیا ہے کیونکہ حکومت نے یہ وعدہ کیا تھا۔ انہوں نے یہ یاد دلایا کہ جب آلو کی قیمتیں گر گئی تھیں تو پارٹی کی حکومت نے آلو کی فصل کسانوں سے خرید لی تھی تاکہ کسانوں کو تباہی سے بچایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ 20کروڑ عوام کے لئے ضروری ہے کہ انہیں غذائی تحفظ مہیا کیا جائے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی زرعی پالیسی پر نظرثانی کرے۔ بلاول بھٹو نے اوکاڑہ کے کسانوں کی جدوجہد پر ان سے یکجہتی کا اظہار کیا اور یہ عزم ظاہر کیا کہ پارٹی کبھی بھی انہیں اکیلا نہیں چھوڑے گی۔ اوکاڑہ کے وفد نے ان کی توجہ مسلم لیگ(ن) کی حکومت کی جانب سے اوکاڑہ فارم کے کاشتکاروں پر ظلم کی جانب دلائی۔ انہوں نے یاددلایا کہ شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے اپنی شہادت چند ہفتے پہلے اوکاڑہ فارم کے کاشتکاروں کی عظیم جدوجہد پر انہیں خراج تحسین پیش کیا تھا اور وعدہ کیا تھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی انہیں اکیلا نہیں چھوڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنی والدہ کے نقش قدم پر چلتے ہوئے یہ وعدہ کرتے ہیں کہ وہ کاشتکاروں کا ساتھ کبھی نہیں چھوڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اوکاڑہ کے فارم کے کاشتکاروں پر حکومتی ظلم ملک کی ساکھ کو دنیا بھر میں نقصان پہنچا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ عرصے قبل بھی سینیٹ کی ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ ان کاشتکاروں کی انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں اور ان کے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے جا رہے ہیں اور اس میں سفارش کی گئی تھی کہ اوکاڑہ سے باہر کسی اور مقام پر ان کے ساتھ کی جانے والی زیادتیوں کی تحقیقات کروائی جائیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین نے مطالبہ کیا کہ سینیٹ کی ان سفارشات پر اس کی روح کے مطابق عمل کیا جائے۔ اجلاس میں رکن قومی اسمبلی فریال تالپور، بختاور بھٹو زرداری، منظور وٹو، راجہ پرویز اشرف، سینیٹر شیری رحمن، سابق گورنر لطیف کھوسہ، قمر زمان کائرہ، تنویر کائرہ، ندیم افضل چن اور بیلم حسنین بھی موجود تھے۔

مزید :

صفحہ اول -