ڈاکٹرعاصم کا وعدہ معاف گواہ بننا’’انجام کا آغاز‘‘ ہوگا

ڈاکٹرعاصم کا وعدہ معاف گواہ بننا’’انجام کا آغاز‘‘ ہوگا

  

کراچی : تجزیہ/ مبشر میر

ڈاکٹرعاصم حسین کے وعدہ معاف گواہ بننے کی صورت میں سابق صدر آصف علی زرداری سمیت پیپلزپارٹی کے کئی اہم شخصیات کے لیے مشکل ترین دور کا آغاز ہوجائے گا ۔باخبر ذرائع نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ اس بات کا قوی امکان ہے کہ ڈاکٹرعاصم حسین کرپشن کے مقدمات میں وعدہ معاف گواہ بن سکتے ہیں ۔سابق وفاقی وزیر کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ ہمیشہ دل کے انتہائی کمزور واقع ہوئے ہیں زیادہ دباؤ برداشت کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتے ۔ڈاکٹر عاصم نے سابق صدر آصف علی زرداری کی دوستی میں بہت سے سیاسی فوائد حاصل کیے ۔کلفٹن پر واقع ان کا پرائیویٹ اسپتال ایک رفاعی پلاٹ پر تعمیر کیا گیا جو کہ حکومت سندھ کی ملکیت تھی جبکہ اسپتال مکمل طور پر کمرشل ادارے کی حیثیت سے چلایا جارہا ہے ۔ان کے اسی اسپتال میں سابق صدر نے اسیری کے ایام بہت وقت گذارا جب وہ حالت بیماری میں وقتاً فوقتاً داخل ہوتے رہے ۔اسی جگہ ان سے سابق وفاقی وزیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ ،اس وقت کے صدر جنرل پرویز مشرف کے نمائندے کی حیثیت سے ملاقاتیں کرتے تھے اور بالآخر 2004میں آصف علی زرداری رہا ہوئے ۔ذرائع اس بات کا انکشاف کررہے ہیں کہ سابق وفاقی وزیر پرصرف کرپشن کے الزامات ہی نہیں بلکہ کرپشن سے حاصل کی گئی رقم ان افراد کو منتقل کرنے کا بھی الزام ہے جو شہر کراچی میں نقص امن کا باعث بنتے رہے ہیں ۔یادرہے کہ انہوں نے 2008میں گورنر سندھ بننے کے لیے ایم کیو ایم کی اعلیٰ ترین قیادت کی حمایت حاصل کرنے کی بھرپور کوشش کی لیکن وہ اس میں کامیاب نہ ہوسکے ۔

مزید :

تجزیہ -