نوشہرہ ،سیاسی مداخلت اور پولیس گردی کے خلاف مقامی کونسلر نے مستعفی ہونے کی دھمکی دے دی

نوشہرہ ،سیاسی مداخلت اور پولیس گردی کے خلاف مقامی کونسلر نے مستعفی ہونے کی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


نوشہرہ(بیورورپورٹ) نوشہرہ اضاخیل میں پولیس میں سیاسی مداخلت اور پولیس گردی کے خلاف مقامی کونسلر نے اپنی کونسلر شپ سے مستعفی ہونے کی دھمکی دے دی ایس ایچ او تھانہ اضاخیل ایس ایچ او کم اور پی ٹی آئی کا ٹاؤٹ زیادہ محسوس ہورہا ہے کیونکہ ایس ایچ او کا تعلق صوابی سے ہے اور اسے سپیکر قومی اسمبلی اسدقیصر کی اشیرباد حاصل ہیں جس سے پولیس میں سیاسی مداخلت کے خاتمے کے نعرے صرف نعرے ہی رہ گئے اگر یہی پولیس اصلاحات ہیں تو یہ اصلاحات قوم مسترد کرتی ہیں وزیراعظم اور وزیراعلیٰ نوشہرہ آکر اپنی تبدیلی کا حال اپنی آنکھوں سے دیکھیں بلاجواز کسی شہری کو تنگ کرنا کونسا انصاف ہے ؟ اس سلسلے میں کونسلر گل ولی متاثرہ شہری سردار باچا اور ان کے والد سردار بہادر نے نوشہرہ میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ میرے بھائی کے سسرمذمل خان اور ہمارے مابین گھریلوتنازعہ چلا آرہا ہے لیکن چونکہ میرے بھائی کا سالہ پی ٹی آئی کا کارکن ہے اسی بنیاد پر ایس ایچ او تھانہ اضاخیل سیدالامین ہمارے مخالفین کی ایماء پر ہمارے ساتھ ناانصافی کررہا ہے انہوں نے کہا کہ تمام تھانوں میں ایس ایچ او ز صرف پی ٹی آئی کے ورکروں کے لئے بٹھادئیے ہیں کیونکہ میرے بھائی کے سسر مذمل خان نے ہمارے گھر آکر میرے والد کو زدوکوب کرکے مارا پیٹا لیکن اس کے باوجود ایس ایچ او نے ہماری فریاد نہ سنی بلکہ الٹا پی ٹی آئی کے کہنے پر میرے ضعیف العمر والد کے خلاف من گھڑت مقدمہ درج کرکے حراساں کیا انہوں نے کہا کہ ہم وزیراعظم عمران خان، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان، آئی جی پولیس ، ڈی آئی جی مردان اور ڈی پی او نوشہرہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ واقع کی تحقیقات کرکے ہماری داد رسی کریں۔