سائنسدانوں نے چھوٹے بچوں کے فضلے سے کینسر کا علاج کرنے کا طریقہ ڈھونڈ نکالا، مگر کیسے؟ طریقہ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

سائنسدانوں نے چھوٹے بچوں کے فضلے سے کینسر کا علاج کرنے کا طریقہ ڈھونڈ نکالا، ...
سائنسدانوں نے چھوٹے بچوں کے فضلے سے کینسر کا علاج کرنے کا طریقہ ڈھونڈ نکالا، مگر کیسے؟ طریقہ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لندن(نیوز ڈیسک) ننھے بچوں کا فضلہ دنیا کی بے وقعت ترین چیزوں میں شمار ہوسکتا ہے لیکن حیرت کی بات ہے کہ سائنسدانوں نے اس غلاظت میں بھی ایک انمول خزانہ ڈھونڈ لیا ہے۔ یہ ایک انتہائی مفید اور مﺅثر ”پروبائیوٹک“ ہے جو طرح طرح کی بیماریوں، اور حتٰی کہ کینسر جیسی خطرناک بیماری کے علاج کے لئے استعمال ہو سکتا ہے۔
یہ عجیب و غریب دعویٰ طبی تحقیق کے مشہور ادارے ”ویک فوریسٹ باپٹسٹ میڈیکل سنٹر“ کے ماہرین نے کیا ہے۔ ”ہیرلڈ آن لائن“ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ بچوں کے ڈائپرز سے اکٹھی کی گئی غلاظت کو لیبارٹری میں پراسیس کرنے کے بعد اس میں سے ایک پروبائیوٹک نکالا گیا ہے جس سے کئی طرح کی بیماریوں کا علاج ہوسکتا ہے۔
سائنسی جریدے ”سائنس رپورٹس“ میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ تقریباً 300 مختلف پیمپرز سے حاصل کئے گئے فضلے پر تجربات کے بعد اس میں سے ”ہیومن اوریجن پروبائیوٹک“ کے نمونے حاصل کئے گئے۔ یہ پروبائیوٹک ”شارٹ چین فیٹی ایسڈ“ پید اکرسکتے ہیں جو کہ نظام انہضام کی صحت کیلئے بنیادی حیثیت رکھتے ہیں۔ ذیا بیطس، موٹاپے، مدافعتی نظام کی کمزوری اور کینسر سے متاثرہ مریضوں میں بھی ”شارٹ چین فیٹی ایسڈ“ کی کمی ہوتی ہے لہٰذا ان سب مریضوں کے لئے یہ فیٹی ایسڈ انتہائی مفید ثابت ہوسکتے ہیں۔
سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس تحقیق کی بنیاد بہت سادہ اصول پر ہے اور وہ یہ کہ چھوٹے بچے عموماً بہت صحت مند ہوتے ہیں اور یقینا عمر بڑھنے کے ساتھ پیدا ہونے والی بیماریوں کا ان میں نام و نشان بھی نہیں ہوتا۔ بس یہی وجہ ہے کہ ان کے فضلے سے حاصل ہونے والے پروبائیوٹک کے استعمال سے بہت سی بیماریوں کا خاتمہ ہوسکتا ہے اور خصوصاً جو بیماریاں عمر بڑھنے کے ساتھ پید اہوتی ہیں ان کا علاج بآسانی ممکن ہوسکتا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -