مقبوضہ وادی میں مظالم ‘ شہر شہر مظاہرے ‘ مودی کے پتلے نذر آتش

      مقبوضہ وادی میں مظالم ‘ شہر شہر مظاہرے ‘ مودی کے پتلے نذر آتش

  

ملتان (نیوز رپورٹر )مرکزی تنظیم تاجران پاکستان اور انجمن تاجران ہول سیل کلاتھ مارکیٹ چونگی نمبر11 زیراہتمام مقبوضہ کشمیر (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

میں 22روز سے نافذ غیر آئینی و غیر قانونی کرفیواور مودی کو عالمی ایوارڈ دیئے جانے کے خلاف چونگی نمبر 14پر مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے سلسلے میں کشمیر ریلی نکالی گئی جس میں تاجروں کی کثیر تعداد میں شرکت کی اور اس موقع پر مظاہرین نے کشمیر بنے گا پاکستان، مودی سے ایوارڈ واپس لو، کرفیوکا نفاذ ختم کرو، کشمیریوں کو حق خود ارادیت دو کے نعرے لگائے اور اقوام متحدہ و عالمی برادری سے فی الفور مظلوم کشمیریوں کو حق خود ارادیت دینے کا مطالبہ کیا گیا احتجاجی مظاہرے کی قیادت مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی، صدر جنو بی پنجاب شیخ جاوید اختر، خالد محمود قریشی، اشفاق انصاری،مراز نعیم بیگ، یو نس انصاری، حافظ عمران سجاد قریشی، شیخ ندیم،محمداسلم قریشی، چوہدری شفیق گجر،ارشد رحمن ودیگر ر ہنماو¿ں نے کی اس موقع پر خواجہ سلیمان صدیقی، شیخ جاوید اختر نے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں نریندر مودی ج طرح سے ظلم و بربریت کا مظاہرہ کر رہا ہے اور گذشتہ بائیس روز سے وہاں پر کرفیو نافذ ہے مظلوم کشمیریوں پر کھانے پینے کی ا شیاءکی فراہمی پر پابندی عائد ہے اور روزانہ مظلوم کشمیری شہید ہو رہے ہیں حریت پسند کشمیری قائدین کو گرفتار کیا جارہا ہے لیکن دوسری طرف عالمی دہشت گرد نریندر مودی کو سول ایوارڈ دیا جارہا ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے ا ب بھی وقت ہے امت مسلمہ متحد ہو جائے اور مظلوم کشمیریوں کی آزادی کے لئے ڈٹ کر مقابلہ کرے اور کشمیر کاز کو مضبوط کیاجائے انہوں نے کہا کہ ملک بھر کی تاجر برادری مظلوم کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑی ہے اور پاک فوج کے شانہ بشانہ جلد کشمیر کو آزاد کر ا کر رہے گی اور دہلی پر پاکستانی پرچم لہرائے گا انہوں نے کہا کہ پوری پاکستانی تاجربرادری کشمیر کی آزادی کے لئے ہر قسم کی قربانی دینے کو تیار ہے انشاء اللہ وہ دن دور نہیں جب کشمیر جلد آزاد ہو گا انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ میں موجودقراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کو فی الفور حل کیا جائے اور کشمیریوں کو جلد از جلد آزاد کرایا جائے۔سبزی وفروٹ منڈی کے زیر اہتمام کشمیر سے اظہار یکجہتی کیلئے ندیم قریشی ، اعجاز احمد اور عبدالوحید کی قیادت میں ریلی نکالی گئی، ریلی کے شرکاءنے کشمیر زندہ باد اور کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے لگائے اور کشمیر پرچم اٹھائے ہوئے تھے ریلی کا آغاز گول چوک سے ہوا اور اختتام منڈی کے گیٹ پر ہوا، اختتام پر ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ندیم قریشی نے کہا کہ مودی سرکار نے نہتے کشمیریوں پر عرصہ حیات تنگ کر رکھا ہے۔ قومی متحدہ کی خاموشی کسی بڑے سانحہ کا باعث بن سکتی ہے مودی سرکار نے عالمی قوانین اور انسانی حقوق کو جوتے کی نوق پر رکھا ہوا ہے ، دوسری جانب عرب رہنما مودی کو ایوارڈ سے نواز رہے ہیں جسکی ہم پرمزمت کرتے ہیں افسوس کی بات ہے کہ کشمیری عوام مسلمانوں کی طرف دیکھ رہی ہے اور عرب مسلمان ہندو راجا کو ایوارڈ سے نواز رہی ہے، ہم حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ عام جنگ کا اعلان کرے پاکستان کا بچہ بچہ کشمیر کیلئے اپنی جان کا نذرانہ پیش کرنے کیلئے تیار ہے، اس موقع پر حاجی عاشق اقبال، حیدر علی، حافظ عرفان حمید اختر ودیگر آڑھتیان و مارکیٹ کے عملے نے شرکت کی۔

وہاڑی ‘ بہاولپور‘ راجن پور‘ ہیڈ پنجند ‘ اوچشریف ‘ خانقاہ شریف ‘ صادق آباد ‘ جیٹھہ بھٹہ ( بیورو رپورٹ ‘ سٹی رپورٹر ‘ نمائندگان پاکستان )(بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

جماعت اسلامی کے زیر اہتمام کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے آل پارٹیز آزادی کشمیر عوامی مارچ کا انعقاد کیا گیا مارچ کی قیادت آل پارٹیز کے رہنماﺅں سید جاوید حسین شاہ، قاضی محمد وہاج قادری، علامہ غلام قنبر عسکری،راﺅ ساجد محمود ،قاری عبداللہ طیب،شیخ عبدالرحمان ،پیر سید افضل ہاشمی ،میاں ذیشان ایڈووکیٹ،ساجد مسعود و دیگر نے کی آزادی کشمیر عوامی مارچ بلدیہ چوک سے شروع ہوا اور مختلف راستوں سے ہوتا ہوا جب پریس کلب پہنچا تو راستے میں مارچ پر تاجروں اور شہریوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں عوامی مارچ کے شرکاءنے ہاتھوں میں پاکستانی اور کشمیری پرچم کے علاوہ بینر اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر کشمیریو ں سے اظہار یکجہتی کی تحریریں درج تھیں مارچ کے شرکاءپاک فوج زندہ باد ،انڈیا مردہ باد کے نعرے لگارہے تھے مارچ کے شرکاءسے حاجی طفیل وڑائچ،قاضی محمد وہاج قادری،علامہ غلام قنبر عسکری،سید محمد افضل ہاشمی، سید جاوید حسین شاہ، قاری عبداللہ طیب،علی وقاص ہنچرائ،راﺅ ساجد محمود،شیخ عبدالرحمان،میاں عبداللہ ذیشان ،مفتی محمد حفیظ،مولانا اکرم ربانی،مولانا غلام مرتضی،ساجد مسعود،حافظ بلال ربانی ،عبدالخالق شاکر،راﺅ فرمان کوثر، حاجی رفیق رانا و دیگر نے خطابات کئے مقررین نے کہا کہ انڈیا کشمیر میں ظلم کے پہاڑ توڑ رہا ہے نوجوان لڑکیوں کی عزتیں سرعام تارتار کی جارہی ہیں اور نوجوان لڑکوں کو شہید کیا جارہا ہے بھارتی قابض فوج نے کشمیریوں کا گھروں سے باہر نکلنا بھی محال کر رکھا ہے اور درجنوں نوجوانوں کو روزنانہ نجی ٹارچر سیل میں ظالمانہ تشدد کا نشانہ بناکر زندگی بھر کیلئے اپاہج کیا جارہا ہے پاک فوج پاکستان کی سرحدوں کی محافظ ہے اور کشمیری عوام پاکستانی قوم اور پاک فوج کی طرف حسرت بھری نگاہوں سے دیکھ رہی ہے۔کشمیر میں ہندوستانی فوج کی ظلم و بربریت کے خلاف اور کشمیری مسلمانوں سے اظہار یک جہتی کے لیے مختلف مذہبی جماعتوں نے فرید گیٹ سے پریس کلب ریلی نکالی ریلی کی قیادت جماعت اہلسنت کے مفتی کاشف صدر غلہ منڈی طیب عاشق جماعت اسلامی کے نصراللہ ناصر قاضی غلام ابو بکر قاری ذوالفقار نقشبندی مولانا محمد ہاشم نے کی ریلی سے خطاب کرتے ہو? مقررین نے کہا کہ کشمیر کی آزادی کی تحریک ابھی نہیں یا کبھی نہیں کے مرحلے میں داخل ہوگئی ہے۔کشمیری پاکستان کی طرف اور پاکستانی حکمران امریکہ کی طرف دیکھ رہے ہیں۔حکومت قوم کو کشمیر پر متحد کرنے کی بجائے قومی یکجہتی کو پارہ پارہ کررہی ہے۔مصیبت کے دنوں میں تو جنگل کے جانور بھی آپس میں نہیں لڑتے،ایک طرف ہمارے گھر میں آگ لگی ہے،ہمارے بچوں کو ذبح کیا اور ہماری بہنوں اور بیٹیوں کی عزتوں سے کھیلا جارہا ہے جبکہ حکمران ایئر کنڈیشنر ہالوں میں بیٹھ کر بیانات جاری کررہے ہیں۔نہتے مگر ایمان کی قوت سے مالا مال افغانوں نے تین عالمی طاقتوں کو شکست دی مگر ایٹمی پاکستان کے حکمران ماﺅں بہنوں بیٹیوں کی چیخ و پکار پر بھی اٹھنے کو تیار نہیں۔مذہبی رہنماﺅں نے کہا کہ بھارت کشمیر یوں کا قتل عام کررہا ہے۔کرفیو کو اس لئے لمبا کیا جارہا ہے کہ لوگوں کے گھروں سے کھانے پینے کی اشیاءختم ہوجائیں اور لوگ بھوک اور پیاس کی وجہ سے موت کے منہ میں چلے جائیں۔ حکومت معمول کی سرگرمیاں چھوڑ کر کشمیر کی آزادی پر فوکس کرے اور 19دنوں سے محبوس کشمیریوں کی عملی مدد کیلئے آگے بڑھے۔حکومت نے ایل او سی پر لگی باڑ کونہ گرایا تو دونوں طرف کے کشمیری خود اس دیوار برلن کو گرادیں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر افغان تین عالمی طاقتوں کو شکست دے سکتے ہیں تو ہم بھی بھارت کا غرورتوڑ سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیر میں لوگ اپنے گھروں میں محصور ہیں اور چوکوں اور چوراہوں میں خونی کھیل کھیلا جارہا ہے۔حکومت پنجاب کی ہدایات پر ضلع بھر میں کشمیری بھائیوں کے حق میںاور مودی مخالف ریلیاں اور سیمینارکا سلسلہ جاری ہے۔راجن پور میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ،گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج،یونین کونسل برڑے والا اور تحصیل جام پور میں تحصیل ہیڈ کوارٹر اسپتال کی جانب سے کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے حوالے سے واک اور سیمینار کا اہتمام کیا گیا۔جس میں میں اداروں کے سربراہان کے علاوہ ڈاکٹرز ،پیرا میڈیکل اسٹاف،طلبا اور شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔شرکاءنے کشمیریوں کے حق میں بینرز اٹھا رکھے تھے اور فلک شگاف نعرے لگاتے ہوئے آگے بڑھتے رہے ۔اس موقع پر شرکاءنے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر پاکستان کا حصہ ہے ۔مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کے قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہئے ۔بھارت کشمیری بھائیوں پر ظلم بند کرے۔ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں ۔شرکاءنے مودی کو للکارتے ہوئے کہا کہ 21دن سے کشمیر میں جاری کرفیو کو ختم کرو ۔کشمیر ہمارا ہے اور ہندو کبھی مسلمان کا بھائی نہیں ہو سکتا۔ اوچ شریف میں مذہبی جماعتوں جماعت اسلامی ,جمعیت علمائ اسلام ,جماعت اہلسنت, تاجر تنظیموں نے بھارتی مظالم کے خلاف اور کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ہاتھی بازار چوک سے الشمس چوک پر ریلی نکالی جسمیں تمام مکاتب فکر کے علمائ کرام مولانا رشید عباسی ,مولانا سراج احمد ,حاجی غلام یسین سومرو قاضی عمر فاروق ,طاہر منظور ایڈووکیٹ و دیگر نے شرکت کی ریلی کے شرکائ سے خطاب کرتے ہوئے علمائ کرام نے کہا کہ تمام اسلامی ممالک کشمیری بھائیوں کی آواز بن کر اٹھ کھڑے ہوں بھارت کا مکمل بائیکاٹ کیا جائے۔ تنازعہ کشمیر کی سنگین صورت حال اب ایک ایسے خوفناک موڑ میں داخل ہو چکی ہے جہاں جذبہ آزادی سے سرشار گزشتہ دو دہائیوں سے قربانیاں دےنے والی تیسری نسل کا آخری معرکہ آزادی کے بالکل قریب پہنچ گیا ہے جمعیت علماءاسلام ،جماعت اسلامی اور اہلسنت والجماعت کے زیر اہتمام کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کےلئے ڈاکخانہ سے لیکر الشمس چوک تک پیدل ریلی نکالی گئی جمعیت علماءاسلام کے ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات بہاولپور مولانا بابر علی صدیقی نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بنیادی طور پر مودی سرکار نے کشمیر کی دنیا میں پہچان کو ختم کرنے کی یہ بھیانک سازش کی ہے جسے پاکستان کبھی بھی کامیاب نہیں ہونے دےگا 70برس سے آزادی محروم کشمیریوں کی آزادی کی گھڑی بلاشبہ اب دور نہیں مقبوضہ کشمیر کی آزادی کو سازش سے سلب کرنے کے بھارتی فیصلے کے بعد طبل جنگ اور جنگی نقاروں کی آوازیں بھی سنائی دی جانے لگی ہیںجبکہ کم سن بچے حریت پسند اور مجاہدین اپنے وطن کی آزادی کےلئے ہر قربانی کےلئے تیار نظر آرہے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر کی عالمی حیثیت کے خاتمہ اور آزادی وطن کےلئے اب تک دی لاکھوں کروڑوں قربانیوں کی توہین انہیں ہرگز منظور نہیں جماعت اسلامی کے رہنماءملک طاہر منطور نے اپنے خطاب میں کہا کہ بھارتی صدر رام ناتھ نے آئین کے آرٹیکل 370کو منسوخ کرکے مظلوم کشمیریوں کی جس طرح توہین کی دنیا میں ایسی درندگی کی مثال نہیں ملتی اس ریلی میںتمام مکاتب فکر کے لوگوں کے علاوہ طلباءو شہری بھی شریک تھے۔ اوچ شریف میں اوچ سول سوسائٹی کے صدرعمرخورشیدسہمن،کامران بخاری اور مذہبی جماعتوں جماعت اسلامی ,جمعیت علمائ اسلام ,جماعت اہلسنت, تاجر تنظیموں نے بھارتی مظالم کے خلاف اور کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ہاتھی بازار چوک سے الشمس چوک پر ریلی نکالی جسمیں تمام مکاتب فکر کے علمائ کرام مولانا رشید عباسی ,مولانا سراج احمد ,حاجی غلام یسین سومرو قاضی عمر فاروق ,طاہر منظور ایڈووکیٹ و دیگر نے شرکت کی ریلی کے شرکائ سے خطاب کرتے ہوئے علمائ کرام نے کہا کہ تمام اسلامی ممالک کشمیری بھائیوں کی آواز بن کر اٹھ کھڑے ہوں بھارت کا مکمل بائیکاٹ کیا جائے ,کشمیریوں پر مظالم اقوام متحدہ کی خاموشی سمجھ سے بالاتر ہے علمائ کرام نے کشمیریوں پر ظلم کا نوٹس لے فوری کرفیو ختم کرایا جائے۔ملک بھر کی طرح صادق آبادمیں بھی کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے احتجاجی مظاہرے جاری ہیں ایپکا کی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ مودی کا پتلا نذرآتش ۔ ایپکا کی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیاگیااحتجاجی مظاہرین نے ہاتھوں میں بینر اٹھا رکھے تھے جس پر کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے درج تھے مظاہرین نے بھارت کےخلاف شدید نعرے بازی کی مظاہرے میں مودی کے پتلے کے گلے میں جوتوں کا ہار پہنایاگیا احتجاجی مظاہرین نے مودی کے پتلے کی چھترول کرکے نفرت کا اظہار کیا مودی صدی کا سب سے بڑا شیطان قرار اس موقع پر شرکا کاکہنا تھا کہ ہم کشمیری بھائیوں کے ساتھ ہیں اگر کشمیر کی جگہ غیر مسلم ملک ہوت تو آج اقوام متحدہ خاموش نہ رہتا ایک طرف کشمیرمیں ماو¿ں بہنوں کی عزتیں لٹ رہی ہیں تو دوسری جانب ہمارے اپنے مسلمان بھائی اپنی اکانومی کی خاطر مودی کو ایوارڈ سے نواز رہے ہیں جو باعث شرم ہے ۔ بھارت کشمیری مسلمانوں پر مظالم ڈھانا بند کرے نہتے کشمیریوں پر بھارتی فوج کا تشدد قابل مذمت ہے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے والا آرڈینیس فورعی طور پر واپس لے اور اقوام متحدہ اپنی قراردادوں پر عمل کراکر مقبوضہ کشمیر کے عوام کو ان کی مرضی کے مطابق حق خود ارادیت دلوائے اور عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں پر ظلم اور بربریت فوری طور بند کرائے پاکستانی قوم مقبوضہ کشمیر کے مسلہ پر پاک افواج کے ساتھ کھڑی ہے کشمیر کے اس اشو پر کسان بورڈ کی خواتین ورکرز نے بھی اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا خواتین ورکرز کی قیادت مہناز امین لانگ نے کی تحصیل چئیرمین کسان بورڈ بہاول پور محمد امین لانگ نے میڈیا کے نمائیدوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے مرکزی چئیرمین جام حضور بخش لاڑ کی قیادت میںہر فورم پر آواز اٹھائیں گے اسموقع پر ملک غلام مصتفی چنڑ،محمد وسیم ،میاں عبد الحمید شیر چولستان ،رانا شکیل ،سعید احمد ،ملک غلام حسین ،و دیگر موجود تھے ۔کشمیریوں سے اظہاریکجہتی کیلئے سنی تحریک پنجاب جواد حسن گل قادری کی قیادت میں نواں کوٹ چوک پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا کشمیر بنے گا پاکستان اور پاک فوج کے حق میں نعرے لگائے گئے ،جنرل سیکرٹری سنی تحریک پنجاب جواد حسب گل قادری نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم کشمیریوں کے لیے خون کے آخری قطرے تک لڑیں گے اور کشمیر کو آزادی دلا کر رہیں گے بھارت نے 22دن سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو لگا رکھا ہے کشمیریوں پر ظلم و ستم کیا جا رہا ہے کھانہ پینا بند کر کھا ہے ہزاروں کشمیری گولیوں سے چھلنی ہو کر ہسپتال میں زیر علاج ہیں ادوایت بھی فراہم نہیں کی جارہی چھوٹے معصوم بچے بھوک سے بل بلا اُٹھے ہیں انہوں نے کہا کہ جس طرح وزیر اعظم عمران خان اور آرمی جنرل قمر جاوید باجوہ نے کشمیریوں کی آواز دنیا میں بلند کی ہے اقوام متحدہ بھی کشمیریوں کا مسئلہ حل کرے۔اس موقع پرصدر سنی تحریک ریاض کالونی احتشام قادری ،ناصر بلوچ ،حاجی عامر بلوچ ،صائم گجر رانا ساجد علی چشتی ،ولید بٹ چشتی ،اویس سمیت دیگر موجود تھے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -