ملکی معیشت جمود کا شکار، مشکلات سے نکلنے کیلئے مشترکہ کوششیں کرنا ہوں گی

ملکی معیشت جمود کا شکار، مشکلات سے نکلنے کیلئے مشترکہ کوششیں کرنا ہوں گی

  

کراچی(اکنامک رپورٹر) پاکستانی معیشت  جمود کا شکار ہے پبلک اور پرائیوٹ سیکٹر کو مل کر اسے مشکلات سے نکالنا ہوگا۔یہ بات ایف پی سی سی آئی کے صدر داروخان اچکزئی نے منگل کو کراچی ایکسپوسینٹر میں منعقدہ تین روزہ 17 ویں انٹرنیشنل ایگزی بیشن آف پلاسٹکس پرنٹنگ پلاسٹی پیک اور 16ویں انٹرنیشنل ایگزی بیشن آف فوڈ اینڈ بیوریج پروسیسنگ اینڈ پیکیجنگ افٹیک، پاکستان کی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر انہوں نے اتنا بڑا ایونٹ منعقد کرنے پر انتظامیہ کی کاوشوں کو سراہااور کہا کہ صنعتی اور خصوصابرآمدی نوعیت کی صنعتوں کی حوصلہ افزائی وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔اس نمائش سے نئی ٹیکنالوجی کو فروغ ملے گا جبکہ برآمدی نوعیت کی صنعتوں کے لیے بھی مدد گار ثابت ہو گی۔جس کی وجہ سے یہ دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ مقابلے اور مسابقت کی دوڑ میں شامل ہو جائیں گی جبکہ  بیرون ملک برآمدی منڈیوں میں بھی اپنا مقام حاصل کرنے کے قابل ہو جائیں گی۔ایم ڈی پیگاسس کنسلٹنسی نے کہا کہ پلاسٹی ایند پیک اور افٹیک کا انعقاد باقاعدگی سے کیا جارہا ہے  چاہے معیشت سست روی کا شکار یا کوئی دیگر مسائل درپیش ہوں مذکورہ ایونٹ بڑے جذبے اور توانائی کے ساتھ منعقد کیے جاتے ہیں تاکہ مقامی صنعتیں انٹرنیشنل مارکیٹ کے ساتھ مقابلے کے قابل بن سکیں۔انہوں نے مزید کہا کہ معلومات کی فراہمی اور جدید ٹیکنالوجی کو متعارف کرانے کے حوالے سے نمائش کے ساتھ ساتھ سیمینار ز کا انعقاد بھی کیا جاتا ہے جہاں پر تجارتی ماہرین اس شعبے میں جدید ترین ٹیکنالوجیز کے استعمال کے حوالے سے اظہار خیال کرتے ہیں تاکہ مقامی  مینو فیکچررز اپنی مصنوعات کو مزید بہتر اور عالمی معیار کے مطابق تیار کرسکیں۔دریں اثناء مہمان خصوصی نے فیتہ کاٹ کر نمائش کا افتتاح کیا۔مذکورہ نمائش میں دنیا کے 35ممالک سے 300سے زائد نمائش کنندگان شریک ہوں گے،جبکہ لوکل اور انٹرنیشنل کمپنیاں اپنے اسٹالوں پر جدید ترین مشینری اور آلات کی نمائش کریں گی۔یہ دنوں نمائشیں پلاسٹک پیکجنگ اور فوڈ ٹیکنالوجی اندسٹری کی قابل اعتماد نمائشیں تصور کی جاتی ہیں جس میں سپلائرز،ماہرین،پیشہ ور افراد اور تاجروں کی بڑی تعداد شرکت کرتی ہے۔اس سال مذکورہ ایونٹس میں انجکشن، بلو مولڈنگ،بلون فلم،پیکجنگ،ری سائیکلنگ،ٹیسٹنگ،فوڈ پروسیسنگ،بیوریج پروسیسنگ اینڈ فیلنگ اور مذکورہ صنعتوں کے دیگر امور کی انجام دہی جدید ترین مشینری اور مواد کی نمائش کی جائے گی۔انڈسٹری اور مختلف برینڈز اس بات سے مکمل طور پر واقف ہیں۔انڈسٹری اور برینڈ اس بات سے مکمل طور پر واقف اور تیار ہیں کہ صارفین کی طلب،سیفٹی،ہائی جین اور سہولت کیا ہے جبکہ اسی نمائش میں تمام انڈسٹریل امور کی انجام دہی کے لیے لاتعداد حل بھی پیش کیے جارہے ہیں۔اس نمائش میں چین،برطانیہ،فرانس،جرمنی،جاپان سمیت دیگر ممالک کے ماہرین اور نمائش کنندگان بھی شریک ہیں۔نمائش کے دوسرے اور تیسرے روز اعلیٰ درجے کی کانفرنس اور فورم کا انعقاد کیا جائے گا۔کانفرنس کا عنوان " Future FoodTech Reshaping the Industry Outlook"ہے جو نمائش کے دوسرے روز منعقد کی جائے گی۔اسی طرح نمائش کے تیسرے دن "State of Converting Recylling and Sustainable Pakaging"کے عنوان سے فورم کا انعقاد کیا جائے گا۔ان تقریبات میں اٹلی،مڈل ایسٹ،پاکستان اور یو اے ای سے تعلق رکھنے والے اسپیکرز اپنے خیالات کا اظہار کریں گے۔نمائش کے تین دنوں کے دوران کالج آف ٹورازم اینڈ ہوٹل مینجمنٹ اور شیفس ایسوسی ایشن پاکستان کے اشتراک سے اسکل شوکیسنگ ایکٹی وٹیز کا انعقاد کیا جائے گا۔پلاسٹی پیک اینڈ افٹیک 2019کو حکومتی اداروں اور تجارتی تنظیموں کا مکمل تعاون حاصل ہے جن میں بورڈ آف انویسٹمنٹ،انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ،پاکستان ایگری کلچر ریسرچ کونسل،پاکستان کونسل آف سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ،پاکستان کیمیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن،شیف ایسوسی ایشن آف پاکستان اور دیگر ادارے شامل ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -