محکمہ زراعت کا باغ جناح کو پی ایچ اے سے واپس لینے کا فیصلہ

محکمہ زراعت کا باغ جناح کو پی ایچ اے سے واپس لینے کا فیصلہ

  

لاہور(سٹی رپورٹر) صوبائی وزیر زراعت ملک نعمان احمد لنگڑیال نے کہا ہے کہ محکمہ زراعت کے فلوری کلچر ڈیپارٹمنٹ کو اپ گریڈ کرنے کیلئے باغ جناح کوپارکس اینڈ ہارٹیکلچر اتھارٹی سے واپس لیا جائے گا،سابقہ حکومت نے چند مفاد پرستوں کو نوازنے کے لئے یہ اقدام اٹھایا جس سے فلور ی کلچر کو ناقابل تلافی نقصان ہوا،باغ جناح محکمہ زراعت کا اثاثہ ہے اوراسے واپس لے کر اس پر بھرپور توجہ دی جائے گی،فلوری کلچر کو فروغ دینے کیلئے پتوکی،چونیاں اور ٹبہ سلطان میں کولڈ سٹوریج اور آکشن سنٹرز بنائے جارہے ہیں جس سے پھولوں کے کاشتکار بھرپور استفادہ کر سکیں گے۔ اپنے دفتر میں فلور ی کلچر کو فروغ دینے کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کے بعد میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر زراعت نعمان احمد لنگڑیال نے کہاکہ 1904سے 2009ء تک باغ جناح محکمہ زراعت کے پاس تھا لیکن ماضی کی حکومت میں چند لوگوں کے ذاتی مفاد کی خاطر اسے پی ایچ اے کے حوالے کر دیا گیا جس سے بہت بڑا نقصان ہوا۔ وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کی خواہش ہے کہ پاکستان پھولوں کا گھر بنے جس کے لئے محکمہ زراعت عملی اقدامات اٹھا رہا ہے۔ 13951ایکڑ رقبے پر پھولوں کی کاشت کی جارہی ہے جس میں سے 7ہزارایکڑ پر سرخہ گلاب جبکہ 3ہزار ایکڑ پر کٹ فلاور کاشت کیا جارہا ہے۔فلوری کلچر کو فروغ دینے کیلئے پتوکی،چونیاں اور ٹبہ سلطان میں کولڈ سٹوریج اور آکشن سنٹرز بھی بنائے جارہے ہیں۔

جس سے پھولوں کے کاشتکار بھرپور استفادہ کر سکیں گے اور اس سے پھولوں کی کاشت میں بھی اضافہ ہوگا۔وزیر زراعت نعمان احمد لنگڑیال نے کہا کہ محکمہ زراعت کا فلوری کلچر ڈیپارٹمنٹ پھولوں کی کاشت کے حوالے سے مفت تربیت بھی دے رہا ہے اور اس میں مرد و خواتین کے لئے عمر کی کوئی حد مقرر نہیں۔ خواتین اور مرد حضرات اس سے فائدہ اٹھائیں تاکہ وہ اپنے گھروں میں اور اپنے پارکوں میں خود کاشت کر سکیں جس کیلئے محکمہ انہیں مفت بیج بھی فراہم کرے گا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ باغ جناح محکمہ زراعت کا اثاثہ ہے اور جیسے ہی ہمیں اس کی منتقلی کا عمل مکمل ہوگا اس کیلئے از سر نو پالیسی مرتب کی جائے گی۔باغ جناح جنوبی ایشیاء کا سب سے بڑ اباغ ہے جس میں مختلف اقسام کے 6ہزار سے زائد درخت موجود ہیں اور بعض درخت ایسے ہیں جو دنیا میں نایاب ہو چکے ہیں۔ اس سے قبل ڈائریکٹر فلور ی کلچر ڈاکٹر عابد محمود نے تفصیلی بریفنگ دی۔ وزیر زراعت نعمان احمد لنگڑیال نے ڈائریکٹر فلور ی کلچر ڈاکٹر عابد محمود اورایڈ من آفیسر ریاض الدین کی خدمات کو سراہا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر انفارمیشن رفیق اختر،شاہد قادر اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -