فیصل آباد میں پی سی ایس آئی آ ر کا مرکز قائم کرنے کا مطالبہ

  فیصل آباد میں پی سی ایس آئی آ ر کا مرکز قائم کرنے کا مطالبہ

  

فیصل آباد (بیورورپورٹ) آل پاکستان بیڈشیٹس اینڈ اپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن نے ٹیکسٹائل سیکٹر کو مستقل بنیادوں پر تکنیکی معاونت اور ٹیسٹوں کی سہولیات مہیا کرنے کیلئے فیصل آباد میں بھی پی سی ایس آئی آر کا مرکز قائم کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ فیصل آباد آباد ی کے لحاظ سے ملک کا تیسرا بڑا شہرہونے کے ساتھ ساتھ ٹیکسٹائل اس کی معیشت کی اصل قوت ہے کیونکہ ملک کی ٹیکسٹائل کی برآمدات میں صرف فیصل آباد کاحصہ 55 فیصد ہے جبکہ ملک کی مجموعی برآمدات میں بھی یہ شہر 38 سے 40 فیصدتک کا حصہ ڈال رہا ہے لہٰذا ٹیکسٹائل سیکٹر کو عالمی معیار کے مطابق لانے کیلئے مزید اقدامات ناگزیر ہیں۔ایسوسی ایشن کے ترجمان نے کہا کہ ملک کیلئے سب سے زیادہ زرمبادلہ کمانے والے ٹیکسٹائل سیکٹر میں دلچسپی لینے پر وہ حکومت کے شکر گزار ہیں تاہم ان کی خواہش ہے کہ اس سیکٹر کو مستقل بنیادوں پر تکنیکی معاونت اور ٹیسٹوں کی سہولتیں مہیا کرنے کیلئے فیصل آباد میں بھی پی سی ایس آئی آر کا مرکز قائم کیا جائے کیونکہ یہاں چھوٹے اور درمیانہ درجہ کی صنعتوں نے کلیدی کردار ادا کیا۔ انہوں نے بتایاکہ اس وقت پاکستان میں چھوٹے اور درمیانے درجے کے33 لاکھ کے قریب کاروبار ی ادارے موجود ہیں جنہیں مالیاتی اور دیگر وسائل کے حصول میں رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑتاہے نیز انکو یہ مسائل وراثت میں ملتے ہیں اسلئے حکومت ایسا نظام تشکیل دے جس کے ذریعے یہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار ی ادارے انسانی وسائل کی تربیت و ترقی، معیار کی تصدیق اور توثیق کے عمل کے بعد حکومتی معاونت حاصل کر سکیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت سرٹیفکیشن انیشی ایٹو پروگرام شروع کرے تاکہ فیصل آباد کے چھوٹے و درمیانے درجہ کے صنعتی یونٹ اس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ملکی برآمدات میں گرانقدر اضافہ کر سکیں۔ پی سی ایس آئی آر کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ یہ ملک کی سب سے اہم اور بڑی ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کی تنظیم ہے جس کے بنیادی مقاصد میں صنعتوں کو ٹیسٹوں کے علاوہ پراڈکٹس ڈویلپمنٹ، برآمدات بڑھانے، درآمدات کے متبادل کی تیاری اور افرادی قوت کیلئے تربیت کی سہولتیں مہیا کرنا شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں پی سی ایس آئی آر کی 9 لیبارٹریاں اور 7 اکیڈمک انسٹی ٹیو شن ہیں۔

 نیز پی سی ایس آئی آر کی لیبارٹریاں عالمی معیار کے مطابق سرٹیفیکیشن کرتی ہیں یہی وجہ ہے کہ ان کے نتائج کو دنیا بھر میں تسلیم کیا جاتا ہے۔  

مزید :

کامرس -