چاول کی مجموعی قومی پیداوار 438ملین ٹن تک پہنچ گئی 

    چاول کی مجموعی قومی پیداوار 438ملین ٹن تک پہنچ گئی 

  

فیصل آباد (بیورورپورٹ) دنیا بھر میں اس وقت چاول کی مجموعی پیداوار 438 ملین ٹن تک پہنچ گئی ہے جبکہ پاکستان 6.16ملین ٹن چاول پیدا کررہاہے جس میں سے چاول کی برآمد 3.75 ملین ٹن ہے نیز گزشتہ سال پنجاب میں 41 لاکھ 98ہزار 456 ایکڑ رقبہ پر دھان کی فصل کاشت کی گئی جہاں سے 34 لاکھ 60 ہزار 123ٹن چاول کی پیداوار حاصل ہوئی۔ ماہرین زراعت نے بتایاکہ حکومتی ہدایات کی روشنی میں انٹرنیشنل رائس ریسرچ انسٹیٹیوٹ اور بعض دیگر تحقیقی اداروں کے اشتراک سے دھان کی ایسی اقسام تیار کی جارہی ہیں جو بیکٹیریل لیف بلائیٹ کی بیماری کے خلاف بھرپور قوت مدافعت رکھتی ہیں۔انہوں نے بتایاکہ عالمی ادارہ سے ایسی اقسام کے جینز بھی منگوائے جا رہے ہیں جو سیلاب کی صورت میں 15دنوں تک پانی کی زیادتی کو برداشت کر نے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔انہوں نے بتایاکہ زیادہ پیداوار کی حامل نئی اقسام کی دریافت، کم لاگت پیداواری ٹیکنالوجی پیکج کی تیاری،دھان کے ضرر رساں کیڑوں، بیماریوں اور جڑی بوٹیوں کے غیر کیمیائی کنٹر ول اور پبلک و پرائیویٹ سیکٹر کیلئے پری بیسک سیڈ کی تیاری پر تحقیق کا عمل جاری ہے۔انہوں نے بتایا کہ رائس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ نے چاول کی بذریعہ بیج براہ راست کاشت کی جدید پیداواری ٹیکنالوجی تیار کی ہے جس کے ذریعے دھان کی بیج سے براہ راست کاشت سے کھیت میں پودوں کی مطلوبہ تعداد80 ہزار پودے فی ایکڑ حاصل کر کے پیداوار میں عام کاشت کی نسبت 6 سے8 من فی ایکٹر اضافہ اور اخراجات میں قریباََ14ہزار روپے فی ایکڑ بچت ہوتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ یہ ٹیکنالوجی مشینی اور روایتی کاشت کی نسبت کافی سستی ہونے کے ساتھ ساتھ کم وقت میں بہترین نتائج دیتی ہے اور اس سے 30سے35فیصد پانی کی بچت بھی ہوتی ہے۔

مزید :

کامرس -