محکمہ فوڈ کو بغیر پراسیس کھلے دودھ کو ضائع کرنے سے روک دیاگیا

محکمہ فوڈ کو بغیر پراسیس کھلے دودھ کو ضائع کرنے سے روک دیاگیا

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس جواد حسن نے محکمہ فوڈ کو بغیر پراسیس کئے کھلے دودھ کو ضائع کرنے سے روک دیا۔فاضل جج نے کھلے دودھ کو ضائع کرکے اس کی میڈیا پر تشہیر سے بھی روک دیاہے۔عدالت نے کھلے دودھ کی فروخت روکنے کے لئے کارروائیوں کے خلاف اشفاق کھرل ایڈووکیٹ کی وساطت سے دائر درخواست پر ڈی جی فوڈ کو بھی طلب کرلیاہے،عدالت نے آئندہ تاریخ سماعت پر ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو بھی پیش ہونے کی ہدایت کی ہے۔درخواست گزارکے وکیل اشفاق کھرل کی طرف سے موقف اختیار کیا گیا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کھلے دودھ کی فروخت کے خلاف کارروائی کر رہی ہے،دودھ تلف کر کے تصویریں بنا کر میڈیا پر دے دی جاتی ہیں،درخواست گزار کے پاس دودھ فروخت کرنے کا لائسنس موجود ہے،پنجاب فوڈ اتھارٹی ایسی کارروائی نہیں کرسکتی،درخواست گزار وکیل نے مزید کہا کہ شوکاز نوٹس جاری کئے بغیر اتھارٹی کارروائی کی مجاز نہیں،وکیل نے استدعا کی کہ فوڈ اتھارٹی کوکھلے دودھ کی فروخت کے خلاف کارروائیاں روکنے کا حکم دیا جائے،عدالت نے دلائل سننے کے بعد فوڈ اتھارٹی کوبغیر پراسیس کئے کھلے دودھ کو ضائع کرنے سے روکتے ہوئے آئندہ سماعت پر ڈی جی فوڈ کو طلب کرلیاہے،عدالت نے اتھارٹی کو کھلے دودھ کو ضائع کرکے میڈیا پرتشہیر سے بھی روک دیا۔

کھلا دودھ

مزید :

صفحہ آخر -