فیصلوں پر نظرثانی کا اختیار، ایم ڈی واسا کومحتاط رہنے کی ہدایت

فیصلوں پر نظرثانی کا اختیار، ایم ڈی واسا کومحتاط رہنے کی ہدایت

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہو ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس جواد حسن نے واسا کے جونئیرافسروں کو ترقی کے لئے سینئرزپرترجیح دینے کے خلاف دائر درخواست پرایم ڈی واسا کو اپنے فیصلوں پر نظرثانی کا اختیار استعمال کرنے میں محتاط رہنے کی ہدایت کردی۔سنیارٹی متاثر ہونے پرمحمد عادل سمیت واسا کے 9 اسسٹنٹ ڈائریکٹرز نے عدالت سے رجوع کیا تھا، درخواست گزاروں کے وکیل صفدر شاہین پیرزادہ نے موقف اختیار کیا کہ جونیئرزافسروں نے حقائق چھپا کر اگلے عہدے پر ترقی کے لئے ایم ڈی واسا کو درخواست دی،ایم ڈی واسا نے حقائق کے برعکس جونیئرز کو ترقی دینے کی سفارش کردی،ایم ڈی واساترقی کی اسی نوعیت کی درخواست پہلے مسترد کرچکے ہیں، ایک ہی طرز کی درخواستوں پر ایم ڈی واسا کے دو مختلف فیصلے آنے سے سینئرافسروں کی ترقی متاثر ہوئی ہے،ایم ڈی واسا کو سنیارٹی متاثر کرکے جونیئرز کو ترقی دینے کا اختیار نہیں،قانون کے تحت ایم ڈی واسا کو اپنے فیصلے پر نظرِ ثانی کا اختیار نہیں، جس پر عدالت نے درخواست ایم ڈی واسا کو واپس بھجواتے ہوئے فیصلہ کرنے کی ہدایت کردی، عدالت نے ایم ڈی واسا کو اپنے فیصلوں پر نظرثانی کا اختیار استعمال کرنے میں محتاط رینے کی ہدایت کی ہے۔

نظر ثانی

مزید :

صفحہ آخر -