تفریحی تھیٹرون کی ٹکٹ بلیک میں فروخت، کھاتوں میں لاکھوں کی ہیرا پھیری اک انکشاف 

    تفریحی تھیٹرون کی ٹکٹ بلیک میں فروخت، کھاتوں میں لاکھوں کی ہیرا پھیری اک ...

  

لاہور(ارشد محمودگھمن/سپیشل رپورٹر)محکمہ ایکسائز انٹرٹینمنٹ برانچ تھیٹرز مالکان کی مبینہ ملی بھگت سے اے اور بی کلاس کی ٹکٹیں بلیک میں فروخت کرکے قومی خزانے کے ماہانہ 2کروڑ سے زائدکی رقم ہڑپ کرنے لگا،مذکورہ تھیڑز کی جانب سے ایجنٹ مافیا کے ساتھ مل کرفروخت ہونے والی 40فیصد ٹکٹوں کا کم اندراج کرکے قومی خزانہ کا نقصان پہنچایا جارہاہے، متعلقہ اعلیٰ افسران بھی کارروائی کرنے کی بجائے اپنا حصہ لے کر خاموش تماشائی بن گئے۔تفصیلات کے مطابق محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن لاہور ریجن بی میں الفلاح،محفل،ناز،پلازہ،باری،الحمرا ہال 1،IIاورقذافی سٹیڈیم کے تھیڑز مالکان،پروڈیوسر ز انٹرٹینمنٹ برانچ کے ای ٹی او منظر خالد اور انسپکٹرز کی مبینہ ملی بھگت سے تھیڑز میں چلنے والے ڈراموں کو دیکھنے والے دوردراز علاقوں سے آنے والے تماشائیوں کو اے کلاس اور بی کلاس کی ٹکٹیں بلیک میں فروخت کی جارہی ہیں،ذرائع کے مطابق محکمہ ایکسائز کی طرف سے تمام تھیڑز میں فرنٹ کی سیٹس کے لئے اے اور بی کے2ہزار جبکہ سی کلاس کے ایک ہزار اور دیگر سیٹوں کے 500روپے نرخ مقررکئے گئے ہیں جن کی چیکنگ کے لئے ای ٹی او اور انسپکٹرز کو تعینات کیا گیاہے،ذرائع کے مطابق مذکورہ تھیڑز مالکان محکمہ ایکسائز کے عملہ سے ساز باز کرکے ٹکٹوں کو ہاؤس فل کے نام پر بلیک کرکے 2ہزار روپے والی 3ہزار،ایک ہزار روپے والی2000 اور 500والی کے800روپے یومیہ کے حساب سے فروخت کیا جارہاہے،جس کی بابت دوردراز کے علاقوں سے آنے والے تماشائی منہ مانگی قیمت اداکرنے پر مجبورہوکر بلیک میل ہورہے ہیں۔ذرائع کے مطابق محکمہ ایکسائز کے عملہ کی مبینہ ملی بھگت سے فروخت شدہ ٹکٹوں کی تعداد میں 40فیصد کم اکاؤنٹ کرکے قومی خزانے کو 2کروڑ 20لاکھ روپے ماہانہ کے حساب سے نقصان پہنچا کر اپنی جیبوں میں ڈال رہے ہیں،ذرائع نے مزید بتایا کہ جب شو کا آغاز کیا جاتاہے تو تھیڑز مالکان مذکورہ عملہ کی مبینہ ملی بھگت سے فرنٹ سیٹ کے آگے خالی جگہوں پراضافی کرسیاں لگاکر 5ہزار روپے فی ٹکٹ وصول کرکے لوگوں کوبٹھا دیتے ہیں۔اس حوالے سے ڈرامہ دیکھنے کے لئے آنے والے شہریوں صداقت، محمود جٹ، ناصر باجوہ، ریاض،شاکر، نیامت،محمد عاصم،عمران،اصغرعلی اورقاسم وغیرہ کا کہناہے کہ محکمہ ایکسائز کے عملہ سے ساز باز کرکے مینجر تھیڑ نے اپنے ایجنٹ مقررکررکھے ہیں،جن کے ذریعے ہال کے مرکرزی دروازے پرٹکٹوں کی سرعام بلیک میں فروخت کی جاتی ہے،دوردراز سے آنے والے لوگوں کا کہناہے کہ ہمیں مجبور ہو کر بلیک ٹکٹیں خریدنا پڑتی ہیں،شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب اور ڈی جی ایکسائزسے فوری طور پر ایکشن لے کر ذمہ دار افسروں کے خلاف کارروائی کی اپیل کی ہے۔اس حوالے سے ای ٹی او انٹرٹینمنٹ منظر خالد کا کہناہے کہ ان باتوں میں کوئی صداقت نہیں ہے،تمام عملہ ذمہ داری سے اپنے فرائض انجام دے رہاہے۔

ٹکٹیں بلیک

مزید :

صفحہ آخر -