حکومت کا ملکی معاشی صورتحال میں بہتری کیلئے ”تاجر دوست ماحول“ پیدا کرنے کا فیصلہ

    حکومت کا ملکی معاشی صورتحال میں بہتری کیلئے ”تاجر دوست ماحول“ پیدا کرنے ...

  

لاہور(نعیم مصطفےٰ سے) ملک کی معاشی صورتحال میں بہتری کے لئے وفاقی حکومت نے ”تاجر دوست ماحول“ پیدا کر نے کا فیصلہ کیا ہے اور اس حوالے سے اہم اقدامات کئے جا رہے ہیں جس کے تحت ایف بی آر اور نیب سمیت دیگر اداروں کو دیئے گئے ایسے اقدامات ختم کر دیئے جائیں گے جن سے حکومت اور تاجروں کے درمیان کشیدگی کی فضا پیدا ہوئی ہے۔ٹیکسوں کے نفاذ سمیت تاجروں کے دفاتر، دکانوں اور رہائش گاہوں اور چھاپوں جیسے حالیہ اقدامات کے آرڈیننس ختم کر کے نیا ترمیم شدہ بزنس آرڈر 2019ء جاری کیا جا رہا ہے، جس کے تحت تجارتی سرگرمیوں کو نئے سرے سے فروغ دیا جائے گا۔وفاقی دارالحکومت کے معتبر ذرائع نے ”پاکستان“ کو بتایا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے تاجر تنظیموں کے عہدیداروں اور معاشی ماہرین کی طرف سے کی جانے والی بعض شکایات اور بتائے گئے مسائل کے بعد فیصلہ کیا کہ ایسے تمام اقدامات فوری طور پر ختم کئے جائیں جن سے تاجروں میں تشویش نے جنم لیا ہے اور تجارتی سرگرمیاں ماند پڑتی جا رہی ہیں۔اس مقصد کے تحت وزیر اعظم نے ایک بزنس کانفرنس میں اہم فیصلے کئے اور یہ طے پایا کہ ”تاجر دوست ماحول“ کے عنوان سے ان فیصلوں پر فوری عمل درآمد کروایا جائے،وزیر اعظم کے احکامات کے تحت ایک بزنس ایڈوائزری کونسل تشکیل دی گئی ہے جس کی سربراہی کے لئے ممتاز صنعت کار اور عالمی شہرت کے حامل بزنس مین طارق شفیع کو امریکہ سے پاکستان بلایا گیا اور وزیر اعظم نے ڈھائی گھنٹے تک ون ٹو ون ملاقات کے دوران ان سے معاشی صورتحال پر سیر حاصل گفتگو کی۔اس دوران یہ طے پایا کہ تاجروں کا ایک ملک گیر کنونشن بھی 10محرم کے بعد اسلام آباد میں منعقد کیا جائے گا، اس حوالے سے وزیر اعظم عمران خان ایک دو روز میں اہم فیصلوں کا باقاعدہ اعلان بھی کریں گے، ایڈوائزری کونسل کے سربراہ طارق شفیع آج کل اس حوالے سے ورکنگ پیپر تیار کر رہے ہیں اور کونسل کے دیگر ممبران کا انتخاب بھی جلد کر لیا جائے گا۔

تاجر دوست ماحول

مزید :

صفحہ اول -