پاک چین سٹریٹجک پارٹنر شپ امن کی ضامن: وزیر اعظم، ہر موقع پر پاکستان کیساتھ ہیں: چینی جنرل 

پاک چین سٹریٹجک پارٹنر شپ امن کی ضامن: وزیر اعظم، ہر موقع پر پاکستان کیساتھ ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، آن لائن)وزیراعظم عمران خان سے چینی سینٹرل ملٹری کمیشن کے وائس چیئرمین جنرل شو چلیانگ نے ملاقات کی، اس موقع پر کشمیر سمیت خطے کی سکیورٹی کے صورتحال اور قیام امن سے متعلق تفصیلی بات چیت ہوئی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم ہاؤس میں ہونیوالے اس ملاقات میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر دفاع پرویز خٹک اور وزیر منصوبہ بندی سمیت دیگر سول اور عسکری حکام نے بھی شرکت کی۔ جنرل شو چلیانگ نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں اپنی چینی قیادت کا تہنیتی پیغام پہنچایا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ چین ہر موقع باالخصوص موجودہ صورتحال میں پاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔وزیراعظم آفس میں ہونیوالی ملاقات کے بعد جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ جنرل شو چلیانگ اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ پاکستان کے دورے پر ہیں۔ انہوں نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور سمیت دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم نے اقوام متحدہ میں مسئلہ کشمیر کی حمایت پر چین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ پاک چین سدا بہار دوستی اور سٹرٹیجک پارٹنرشپ خطے میں امن کی ضامن ہے۔وزیراعظم نے جنرل شو چلیانگ کو مقبوضہ کشمیر پر بھارتی تسلط اور غیر قانونی اقدامات سے آگاہ کیا۔انہوں نے چینی جنرل کو آگاہ کیا کہ بھارت اپنے غاصبانہ اقدامات سے نظر ہٹانے کیلئے جھوٹا آپریشن کر سکتا ہے۔ مقبوضہ کشمیر سے کرفیو فوری طور پر اٹھانا چاہیے۔ انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو مقبوضہ کشمیر تک رسائی دی جائے۔اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک نے مختلف شعبوں میں دیرینہ تعلقات کو مزید مستحکم کرنے پر اتفاق کیا۔ جنرل شو چلیانگ کا کہنا تھا کہ چین ہر موقع بالخصوص موجودہ صورتحال میں پاکستان کے ساتھ کھڑا ہے۔ جنوبی ایشیا ء میں امن اور معاشی استحکام کیلئے متنازعہ امور کا حل ضروری ہے۔ پاکستان اور چین خطے میں امن واستحکام کیلئے ایک دوسرے کے ساتھ چلتے رہیں گے۔

عمران خان ملاقات

 اسلام آباد(آن لائن) وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پاکستان انٹر نیشنل ائیر لائنز کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے حوالے سے اجلاس ہوا ہے۔ حکومت پی آئی اے کو منافع بخش اور فعال ادارہ بنانے کیلئے کوشاں ہے۔ اجلاس میں پاکستان انٹرنیشنل ائیر لائنز کے موجودہ فلیٹٓ میں جدید اور نئے طیارے شامل کرنے،مسافروں کو بہتر سفری سہولتیں مہیا کرنے اورمستقبل کی ضروریات کو مدنظر رکھ کر ادارے کی استعداد بڑھانے کے حوالے سے تفصیلی گفتگوکی گئی۔اجلاس میں سی ای او پی آئی اے ائیر مارشل ارشد ملک نے وزیرِ اعظم کو بتایا کہ پی آئی اے کی موجودہ انتظامیہ کی شب و روز کاوشوں کی بدولت ادارے کے خسارے میں مسلسل کمی آر ہی ہے۔وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ ملک میں ائیر ٹرانسپورٹ کا خاطر خواہ پوٹینشل موجود ہے جو کہ آئندہ بیس سالوں میں دوگنا سے بھی زائد تک بڑھے گا۔ پی آئی اے کو جدید خطوط پر استوار کرنے سے جہاں ادارے کے منافع میں اضافہ ہوگا وہاں کاروباری سرگرمیوں اور سیاحت کے فروغ میں بھی مدد ملے گی۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ  پاکستان انٹرنیشنل ائر لائن نہ صرف قومی ادارہ بلکہ ملک کی پہچان ہے۔ ماضی کی منافع بخش ائر لائن اور ہوابازی کے شعبے میں خطے کا سرکردہ ادارہ بد انتظامی اور غفلت کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہوا۔انہوں نے کہا کہ حکومت پی آئی اے کو منافع بخش اور فعال ادارہ بنانے کے لئے کوشاں ہے۔

پی آئی اے

مزید :

صفحہ اول -