سلیکٹڈ وزیراعظم، اللہ کی ذات اور موت کو یاد رکھیں،حکومت کا سیاسی مخالفین کوعلاج کی سہولیات سے انکار شرمناک حرکت ہے:پیر اعجاز ہاشمی

سلیکٹڈ وزیراعظم، اللہ کی ذات اور موت کو یاد رکھیں،حکومت کا سیاسی مخالفین ...
سلیکٹڈ وزیراعظم، اللہ کی ذات اور موت کو یاد رکھیں،حکومت کا سیاسی مخالفین کوعلاج کی سہولیات سے انکار شرمناک حرکت ہے:پیر اعجاز ہاشمی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے پاکستان کےسربراہ اورمتحدہ مجلس عمل کے  نائب صدر  پیراعجازحمد ہاشمی نے کہا ہے کہ حکومت کا سیاسی مخالفین کو جیل بھجوانے کے بعد علاج کی سہولیات سے انکار غیر انسانی، غیر آئینی اور شرمناک حرکت ہے،سلیکٹڈ وزیراعظم عمران خان، اللہ تعالی کی ذات اور موت کو بھی یاد رکھیں،ہمیشہ اقتدار صرف رب کائنات کا ہے،کٹھ پتلیوں کا ویسے بھی اقتدار کے بعد کوئی وارث بھی نہیں بنتا،کسی بھی ملزم کو علاج سے انکار اس کی زندگی سے کھیلنے کے مترادف ہے،سابق صدر مملکت آصف علی زرداری اور سابق وزیر اعظم نوازشریف کو علاج کی سہولیات سے انکار شرمناک اور قابل مذمت ہے۔

مرکزی آفس میں مختلف وفود سے گفتگوکرتے ہوئےپیر اعجاز ہاشمی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کی رہنما فریال تالپور کو جس انداز سے آدھی رات کو جیل منتقل کیا گیا،اس کی پاکستان سمیت کسی بھی مہذب معاشرے میں کوئی مثال نہیں ملتی،عمران خان یاد رکھیں بڑے بڑے مطلق العنان آمر یہاں آئے، جنہوں نے سیاسی کارکنوں اور قائدین کو احتساب کے نام پر دباؤ میں رکھا،مگر بعد میں ان کا نام لیوا کوئی نہیں ہوتا،عمران خان کو یاد ہوگا ایک جنرل پرویز مشرف ہوا کرتے تھے، جو خود کو اس ملک کا بڑا بدمعاش اور طاقتور حکمران سمجھتے تھے،وہ بھی مخالفین کو جیلوں میں ڈال دیا کرتا تھا،اس نے بھی احتساب کا نعرہ لگایا تھا اور یہاں بڑے مکے لہرایا کرتا تھا،آج وہ کہاں ہے؟ عدالتیں اسے بلوا رہی ہیں مگر وہ بیرون ملک سے آنے کی جرات نہیں کررہا۔پیر اعجاز ہاشمی نے کہا کہ عمران خان، مودی کو کشمیر پر ظلم کی وجہ سے ہٹلر کہتا ہے جبکہ اقدامات سے مودی اور عمران میں کوئی فرق محسوس نہیں ہو رہا،وہ کشمیریوں کے لئے اور عمران خان پاکستان کے عوام اور پوزیشن کے لیے ہٹلر بنا ہوا ہے۔ انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ سے اپیل کی کہ وہ اپوزیشن رہنماؤں آصف علی زرداری اور نواز شریف کو علاج کی سہولیات سے انکار ازخود نوٹس لیں کیونکہ حکمران سیاسی انتقام میں علاج سے انکاری ہیں،عدلیہ نے سا بق صدر اور وزیر اعظم کو انصاف فراہم نہ کیا تو عدالتی نظام پر بھی سوالات اٹھنا شروع ہوجائیں گے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -