سینیٹ  قائمہ کمیٹی برائے  داخلہ نےمقبوضہ کشمیر میں سنگین  انسانی بحران کے پیش نظر بین الاقوامی امن فوج تعینات کرنے کا مطالبہ کر دیا

سینیٹ  قائمہ کمیٹی برائے  داخلہ نےمقبوضہ کشمیر میں سنگین  انسانی بحران کے ...
سینیٹ  قائمہ کمیٹی برائے  داخلہ نےمقبوضہ کشمیر میں سنگین  انسانی بحران کے پیش نظر بین الاقوامی امن فوج تعینات کرنے کا مطالبہ کر دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے  مقبوضہ کشمیر میں سنگین  انسانی بحران کے پیش نظر بین الاقوامی امن فوج کے دستے تعینات کرنے کا مطالبہ کردیا، کمیٹی نے  دورہ ایل او سی کا اعلان بھی کیا ہے جبکہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کیخلاف جنگی جرائم کا مقدمہ دائر کرنے کیلئے آئندہ اجلاس میں مشاورت کے سلسلے میں سیکرٹری خارجہ کو مدعو کرلیا گیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق قائمہ کمیٹی برائےداخلہ کا اجلاس چیئرمین سینیٹر رحمان ملک کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا ۔ قائمہ کمیٹی کے  اجلاس میں کشمیری ، فوجی اور ایف سی کے شہدا کے لیے دعا کی گئی ۔سینیٹر رحمان ملک نے کمیٹی کی طرف سے بھارتی بربریت کی مذمت کی اورکہا کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف دنیا ہر فورم پر آواز اٹھائیں گے،بھارتی وزیر اعظم جنگی مجرم ہے اس کا ٹرائل کروائیں گے،حکومت نے کشمیر میں بھارتی اقدامات پر سلامتی کونسل سے رجو ع کر کے احسن قدم اٹھایا،کشمیر سےمتعلق عالمی انسانی حقوق کےہائی کمیشن کو خط لکھا ہے،ہم  بھارتی اقدامات کے خلاف ایل او سی تک جائیں گے،سابق بھارتی وزیر داخلہ نے اعتراف کیا تھا کہ بھارت میں ہندو انتہا پسندوں کا کنٹرول ہے،کشمیر میں مظالم کو دنیا کے سامنے رکھ رہا ہوں، کشمیر پر سب مل کر کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کوواضح  پیغام دینا چاہتے  ہیں کہ ہم ان کے شانہ بشانہ ہیں،مودی کیخلاف جنگی جرائم کے قانونی شواہد موجود ہیں اور ہرصورت مودی کا ٹرائل کروائیں گے،24 دنوں سے کشمیریوں کامحاصرہ ہے ، ظلم کی انتہا ہوگئی ہے۔سینیٹر کلثوم پروین نے کہاکہ خداکا واسطہ ہے کہ بھارت کشمیر سے کرفیو ہٹا لے ، معصوم بچے اور حاملہ خواتین انتہائی کربناک صورتحال سے دوچار ہیں،اگر وہاں انہیں ریلیف نہیں مل سکتا تو اس  انسانی بحران سے نمٹنے کیلئے  ان خاندانوں کو آزاد کشمیرلایاجائے۔ کمیٹی نے مطالبہ کیا کہ حاملہ خواتین گھروں میں قید ہوکر رہ گئی ہیں، بچیوں کے زندہ  درگورہونے والی صورتحال ہوگئی ہے، عالمی برادری کب جاگے  گی؟ہندو انتہا پسندوں نے بھارتی  حکومت کو یرغمال بنا رکھا ہے۔قائمہ کمیٹی نے مطالبہ کیا ہے کہ اس سنگین صورتحال کے پیش نظر مقبوضہ کشمیر میں بین الاقوامی امن  فوج کے دستے تعینات کیے جائیں ۔

قائمہ کمیٹی نے اعلان کیا ہے کہ  مسئلہ کشمیر پر مشترکہ پلان آف ایکشن بنایا جائے گا،سیکرٹری داخلہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ نریندر مودی کے  مظالم کے حوالے سے  سیکرٹری جنرل انٹرپول کو خط لکھیں کیونکہ  مظالم کامعاملہ انٹر پول کے مینڈیٹ میں شامل ہے اور نئی دہلی میں  انٹرپول اپنے  دفتر کے ذریعے نریندر مودی  کو یہ نوٹس بجھوائے۔ انہوں نے کہاکہ اگر کچھ نہ ہوتا تو بھارتی اپوزیشن کو سرینگر کے  ہوائی اڈے سے واپس نہ بجھوایا جاتا، کچھ تو ہے جس کی پردہ داری ہے۔۔

مزید :

قومی -