مقبوضہ کشمیر پر مودی سرکار کے مظالم کے خلاف بھارتی افسر نے اعلان بغاوت کردیا

مقبوضہ کشمیر پر مودی سرکار کے مظالم کے خلاف بھارتی افسر نے اعلان بغاوت کردیا
مقبوضہ کشمیر پر مودی سرکار کے مظالم کے خلاف بھارتی افسر نے اعلان بغاوت کردیا

  

نئی دہلی ( ڈیلی پاکستان آن لائن )مقبوضہ کشمیر میں مودی سرکار کے مظالم پر بھارتی ایڈمنسٹریٹو سروس افسر کنن گوپی ناتھن نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے کر اعلان بغاوت کردیا ۔ان کا کہناہے کہ اظہار رائے پر پابندی نہیں لگائی جاسکتی، اگر ادارے تباہ ہونے لگیں توکسی نہ کسی کو آواز اٹھانی ہوتی ہے۔

بھارتی نیوز چینل انڈیا ٹوڈے کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے گوپی ناتھن نے کہا کہ کسی بھی جمہوریت میں عوام سے احتجاج کا حق نہیں چھینا جاسکتا۔ انہیں مقبوضہ کشمیر کے عوام پر لگائی گئی اظہار رائے کی پابندی قبول نہیں ہے، جمہوریت میں آزادی اظہار کے بغیر زندگی کا کوئی مطلب نہیں، مقبوضہ کشمیر میں ممکنہ تشدد کے نام پر آزادی اظہار پر لگائی گئی پابندی کل بھارت کے کسی بھی حصے میں لگائی جاسکتی ہے۔ اگر کل دہلی میں شہریوں کو حاصل حقوق سلب کرلیے جائیں تو کیا ہوگا؟ عوام چاہے خوش ہوں یا ناراض اظہار رائے کی آزادی سلب نہیں کی جاسکتی۔کنن گوپی ناتھن کا کہنا تھا کہ انسانی جانیں بچانے کے نام پر لگائی گئی پابندیاں محض فریب ہیں، کیا کسی کو یہ کہہ کر جیل میں بند کیا جاسکتا ہے کہ یہ اس کی جان بچانے کے لیے کیا جارہا ہے۔

مزید :

قومی -