مقبوضہ کشمیر کی حیثیت کو یکطرفہ طور پر تبدیل کرکے بھارت سرکار نے تاریخی حماقت کا ارتکاب کیا:سیف اللہ خان نیازی

مقبوضہ کشمیر کی حیثیت کو یکطرفہ طور پر تبدیل کرکے بھارت سرکار نے تاریخی ...
مقبوضہ کشمیر کی حیثیت کو یکطرفہ طور پر تبدیل کرکے بھارت سرکار نے تاریخی حماقت کا ارتکاب کیا:سیف اللہ خان نیازی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے چیف آرگنائزر سیف اللہ خان نیازی نے کہا ہے کہمقبوضہ کشمیر کی حیثیت کو یکطرفہ طور پر تبدیل کرکے بھارت سرکار نے تاریخی حماقت کا ارتکاب کیا ہے،مقبوضہ کشمیر کی حیثیت میں تبدیلی پر عاقبت نااندیش بی جے پی قیادت کا موقف مکمل طور پر احمقانہ اور خطرناک حد تک گمراہ کن ہے،جموں کشمیر کے وسائل و جاگیر پر مستقل قبضہ کا خواب پورا کرنے کے لیے آبادی کا تناسب بدلنے کی کوششیں جاری ہیں۔

تفصیلات کے مطابق حکمران جماعت کے مرکزی رہنما سیف اللہ خان نیازی کا کہنا تھا کہ آرٹیکل 370 پر وار کر کرکے بیوقوف مودی سرکار نے کشمیر کیساتھ الحاق کا واحد جواز بھی منہدم کردیا ہے،اہل کشمیر کی واضح اکثریت ہے اور پاکستان نے تو اس الحاق کو کبھی سرے سے قبول ہی نہیں کیا،آرٹیکل 370 پر وار کرکے بھارت باضابطہ طور پر قابض ریاست کی حیثیت اختیار کرچکا ہے،سلامتی کونسل کی متعدد قراردادوں اور شملہ معاہدے سمیت متعدد معاہدات بھارت کو کشمیر پر یکطرفہ فیصلے کی قطعا اجازت نہیں دیتے،مقبوضہ کشمیر کی حیثیت میں یکطرفہ تبدیلی کا بھارتی اقدام اقوام متحدہ اور اسکے چارٹر کو نیچا دکھانے کی واضح کوشش ہے،بھارت سرکار کا یہ اقدام پرامن بقائے باہمی کے اصول اور عالمی قوانین پر بھی کاری ضرب ہے،شدت پسند آرایس ایس اور بی جے پی اس شرمناک اقدام پر خوشی کے شادیانے بجا رہے ہیں،ان کے طرز عمل سے واضح ہے کہ بھارت سرکار اور اسکے ادارے اپنے ذمے دوطرفہ و عالمی ذمہ داریوں کو قطعا سنجیدگی سے نہیں لیتے۔

انہوں نے کہا کہ سلامتی کونسل کا حالیہ اجلاس کشمیر کو اندرونی معاملہ قرار دینے کے بھارتی موقف کی صریحا نفی کرتا ہے،سلامتی کونسل کے اجلاس سے ثابت ہو گیا کہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے مابین تصفیہ طلب عالمی مسئلہ ہے،انتہاپسند بی جے پی ایک جانب غیر قانونی اقدامات پرخوشیاں منا رہی ہے جبکہ دوسری جانب 90 لاکھ کشمیریوں پر عرصہ حیات تنگ کیے ہوئے ہے،سفاک مودی کی قیادت میں آر ایس ایس اور بی جے پی کی سرکار ہٹلر کی طرز پر کشمیریوں کی نسل کشی اور قتل عام کے منصوبہ بندی میں مصروف ہے،مقبوضہ جموں کشمیر ایک کھلے قیدخانے میں بدلی جا چکی ہے،ذرائع ابلاغ مکمل طور پر بند، تین ہفتوں بعد بھی معاشرہ و کرفیو بدستور جاری ہے،کسی شرم کے احساس اور احتساب کے خوف  سے آزاد ہو کر انسانی حقوق بڑے پیمانے پر پامال کیے جا رہے ہیں،انسانی حقوق کی بڑے پیمانے پر پامالی سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لئے لیے بے حیا سرکار جعلی فلیگ آپریشن کی تیاریوں میں ہے،اپنے کالے کرتوتوں کا جواز فراہم کرنے کے لئے جھوٹے اور من گھڑت پروپیگنڈے کا سلسلہ شروع کیا جا چکا ہے،بھارت سرکار غیر جانبدار مبصرین کو داخلے اور میڈیا کو کام کرنے کی اجازت دینے کو تیار نہیں۔سیف اللہ خان نیازی نے کہا کہ انتہا پسند بھارت سرکار کے اقدام سے ہندوستان میں مقیم مختلف مذہبی اور نسلی اقلیتوں میں بے پناہ خوف کی لہر دوڑ گئی ہے،کشمیر پر بھارت سرکار کے قبضے کی کوشش کے بعد پورے ہندوستان میں علیحدگی کی تحریکیں زور پکڑیں گی اور پنجاب میزو رام ناگالینڈ آسام تریپورہ چھتیس گڑھ اور مانی پور سے اٹھنے والی تحریکیں بھارت کے ریزہ ریزہ ہونے پر منتج ہونگی۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -