آ رایل این جی کی قیمت پالیسی کیمطابق بڑھائی، محکمہ سوئی گیس کی وضاحت

آ رایل این جی کی قیمت پالیسی کیمطابق بڑھائی، محکمہ سوئی گیس کی وضاحت

  

لاہور(پ ر)محکمہ سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمٹیڈنے کچھ اخبارات میں آ رایل این جی صارفین پر 350بلین روپے کا اضافی بوجھ ڈالنے کی خبر شائع ہونے کی وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ قیمتوں کے تعین کے طریقہ کار کو کابینہ کے ای سی سی نے  2016 میں منظور کیا۔اخبارات نے خبر شائع کرنے سے پہلے ہمارا موقف نہیں لیا۔ آر ایل این جی کی فروخت کو ایک رنگ فینسڈ سرگرمی قرار دیا گیا تھاجس کی قیمت کا تعین وفاقی حکومت کی طرف سے جاری کردہ پالیسی کے تحت اوگرا کرے گا۔ سسٹم گیس کے شعبے میں صرف 7 فیصد یو ایف جی کے ایک بینچ مارک کو پورے نیٹ ورک یعنی ٹرانسمیشن اور ڈسٹریبویشن دونوں کے لئے سمجھا جاتا ہے اور آخر میں، صارفین کی قیمتوں میں ٹرانسمینش اور ڈسٹریبویشن صارفین کے لئے یکساں معیار کا احاطہ کیا جاتا ہے۔گیس کی قیمتوں کا تعین کرنے کے لئے2003-04کے بعد سے ایک متفقہ معیار قائم ہے۔آر ایل این جی کی قیمتوں کا تعین کرنے کی صورت میں، ٹرانسمیشن طبقہ کے صارفین کے الگ الگ اور کم یو ایف جی معیار قائم کرنے کا مقصد بجلی کے صارفین کو کم سے کم ممکنہ لاگت بجلی منتقل کرنا تھا۔

سوئی گیس وضاحت

مزید :

صفحہ آخر -