سیکولر بھارت کے حامی مودی کی ہندو تو ا پالیسیوں کیخلاف سراپا احتجاج ہیں: شاہ محمود قریشی 

        سیکولر بھارت کے حامی مودی کی ہندو تو ا پالیسیوں کیخلاف سراپا احتجاج ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ سیکولر بھارت کے حامی ہندوتوا پالیسیوں کے سبب سراپا احتجاج ہیں۔ سعودی عرب کے نائب وزیر خارجہ عادل الجبیر کا فلسطین کے حوالے سے بیان خوش آئند ہے جس نے تمام قیاس آرائیوں کو ختم کر دیا ہے۔وہ جمعرات کو وزارت خارجہ میں سابق خارجہ سیکرٹریز کے مشاورتی اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اجلاس میں  مقبوضہ جموں کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت، افغان امن عمل اور خطے میں امن وامان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے نہتے شہری گزشتہ ایک سال سے بدترین کرفیو کا سامنا کر رہے ہیں۔ بھارت اپنے داخلی انتشار سے توجہ ہٹانے کیلئے ایل او سی کی مسلسل خلاف ورزیاں کرتے ہوئے معصوم شہریوں کو نشانہ بنا رہا ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے شرکا اجلاس کو افغان طالبان کے ساتھ ہونے والی ملاقات اور افغان امن عمل کے حوالے سے اب تک ہونے والی پیش رفت سے بھی آگاہ کیا۔اجلاس کے دوران متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے مابین طے پانے والے حالیہ معاہدے اور مشرق وسطیٰ کی صورتحال کو بھی زیر بحث لایا گیا۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ سعودی عرب کے نائب وزیر خارجہ عادل الجبیر کا فلسطین کے حوالے سے سامنے آنے والا بیان خوش آئند ہے۔ سعودی عرب کے فلسطین کے حوالے سے بیان نے میڈیا میں ہونے والی قیاس آرائیوں کو ختم کر دیا ہے۔انہوں نے شرکا اجلاس کو اپنے حالیہ دورہ چین اور چینی ہم منصب کے ساتھ ہونے والی ملاقات کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا اور کہا کہ پاکستان افغان امن عمل سمیت خطے میں امن واستحکام کیلئے اپنا مخلصانہ کردار ادا کرتا رہے گا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ اگر امن طاقت سے آتا تو 41سال کا عرصہ کم نہیں تھا۔ افغان طالبان نمائندہ وفد کے ساتھ ملاقات سود مند رہی اور طالبان وفد کے ساتھ گفتگو دوحہ میں امن معاہدے پر عملدرآمد سے متعلق ہوئی۔ افغانستان مسئلے کا حل مذاکرات کے ذریعے ہی ممکن ہے کیونکہ اگر امن طاقت سے آتا تو 41سال کا عرصہ کم نہیں تھا۔

شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -