مضاربہ سکینڈل کی آڑ میں لاکھوں کا غبن کرنیوالا فراڈیہ گرفتار

  مضاربہ سکینڈل کی آڑ میں لاکھوں کا غبن کرنیوالا فراڈیہ گرفتار

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)قومی احتساب بیوروخیبرپختونخوانے مبینہ طورپر اسلامک مضاربہ سکینڈل کی آڑمیں سادہ لوح عوام کے لاکھوں روپے غبن کرنیوالے تحصیل بالاکوٹ،ضلع مانسہرہ کے رہائشی محمودالحسن ولدمحمدحسن خان کوگرفتارکرلیا۔تفصیلات کے مطابق ملزم محمودالحسن نے الاحسان ملٹیپل بزنس اینڈانوسٹمنٹ بیورومانسہرہ کے نام پراپنے ساتھیوں کی ملی بھگت سے سادہ لوح عوام کوسرمایہ کاری کے عوض منافع کالالچ دیکران کی محنت کی کمائی خردبردکردی،ملزموں نے منافع دینے کی بجائے سرمایہ کاروں کودھوکہ دیکران کے اپنے پیسے بھی نہیں دیئے اورروپوش ہوگئے۔یہاں یہ بات قابل ذکرہے کہ اسی کیس میں ملزمان عثمان علی اورروشن دین پراحتساب عدالت کی جانب سے سزاسنائی گئی تھی اورمحمد شعیب نے پلی بارگین کی جبکہ ملزم محمودالحسن ودیگرنے قانونی کاروائی میں حصہ لینے سے انکارکردیاجس کے بعداحتساب عدالت نے2018 میں انہیں اشتہاری مجرم قراردے دیا۔ڈائریکٹرجنرل قومی احتساب بیوروخیبرپختونخوابریگیڈیئر(ر)فاروق ناصراعوان نے کہاہے کہ بدعنوانی کیخلاف عزم وزیرو ٹالرنس اورچیئرمین نیب کے وژن کوعملی جامہ پہنانے کیلئے بدعنوان عناصرکیخلاف قانونی چارہ جوئی پرکوئی سمجھوتہ نہیں کیاجائیگا۔انہوں نے کہاکہ عوام کی محنت کی کمائی غبن کرنے والے اورقومی خزانے کونقصان پہنچانے والوں کیلئے نیب ہمہ وقت کاروائی کیلئے تیاررہتاہے،بدعنوانی کے متاثرہ عوام کیلئے نیب کے دروازے کھلے ہیں،درخواست اوردستاویزات سمیت بلاجھجک نیب کے ساتھ رابطہ کیاجاسکتاہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -