سرکاری جامعات ستمبر میں کھولنے کا فیصلہ، کورونا پھیلنے کا خدشہ 

  سرکاری جامعات ستمبر میں کھولنے کا فیصلہ، کورونا پھیلنے کا خدشہ 

  

پشاور (سٹی رپورٹر)پشاور کے سرکاری جامعات ستمبر میں کورونا سے بچاو کے ایس او پیز کے تحت کھولنے جا رہے ہیں تاہم سرکاری جامعات میں.ایسو او پیز پر کوئی عمل دارامد ہوتا ہوا نظر نہیں ارہا،زیادہ تر جامعات میں انتظامی سٹاف سمیت ٹیچنگ کیڈر اور داخلہ کیلئے آنے والے طلبہ بھی ایس او پیز پر عمل درامد نہیں کر رہے جسکی کے باعث کورونا پھیلنے کاخدشہ بڑھ چکا ہے تفصیلات کے مطابق پشاور یونیورسٹی کیمپس میں ایک طرف داخلے شروع ہے  جسکے لئے صوبہ بھر سے طلباء یونورسٹیز کا رخ کرنے لگے تاہم جب سے یونیورسٹیز  انتظامی سٹاف اور ٹیچنگ سٹاف  کیلئے ایس او پیز کی تحت کھولی گئی تب سے ہی جامعات میں کورونا ایس او پیز پر کوئی خاص عمل درامد نہیں ہو رہا جبکہ کورونا وباء کی اڑ میں زیادہ تر انتطامی سٹاف دفاتر میں کام کرنے بھی نہیں اتے جسکی باعث نہ صرف داخلے کیلئے آنے والے طلبہ کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے بلکہ ایس او  پیز پر عمل درامد نہ کرنے سے کورونا وباء پھیلانے کا امکان بھی بڑھ چکا ہے،ستمبر سے طلبہ کیلئے جامعات اور ہاسٹل کھولنے کے بعد انتظامیہ کیلئے ایس او پیز  پر عمل رامد کروانا ایک اور مسلہ بن جائے گا جبکہ صوبہ کی تاریخی جامعات جامعہ پشاور،اگریکلچر،انجیئرنگ یونیورسٹی اور اسلامیہ کالج کی انتظامیہ اس حوالے سے غیر سنجیددگی کا مظاہر ہ کرنے لگے اور کورونا وباء کے ایس او پیز کو ردی کی ٹوکری میں پھینک دیا گیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -