راہ چلتے موٹرسائیکل سوار کو پروٹوکول گاڑی پر سوار پولیس اہلکاروں نے پیٹ ڈالا،  ویڈیو وائرل 

راہ چلتے موٹرسائیکل سوار کو پروٹوکول گاڑی پر سوار پولیس اہلکاروں نے پیٹ ...
راہ چلتے موٹرسائیکل سوار کو پروٹوکول گاڑی پر سوار پولیس اہلکاروں نے پیٹ ڈالا،  ویڈیو وائرل 

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) ترنول پھاٹک کے قریب راولپنڈی پولیس کے اہلکاروں نے راہ چلتے موٹرسائیکل سوار کو روک کر تشدد کا نشانہ بنا ڈالا اور پھر چلتے بنے، پولیس اہلکاروں کی اس حرکت کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی اور انٹرنیٹ صارفین کو شبہ ہے کہ ویڈیو میں موجود پولیس وین کسی سکواڈ کا حصہ ہے اور ممکنہ طور پر  سکواڈ کیلئے بروقت راستہ نہ چھوڑنے  پرتشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ 

ایک صارف نے ویڈیو شیئرکرتے ہوئے لکھا کہ " وفاقی دارالحکومت کے علاقے میں ترنول ریلوے پھاٹک ہے غالبا،پنجاب   کے اعلی تربیت یافتہ اہلکاروں کی شہریوں کو تربیت دینے کی فوٹیج سامنے آگئی، غالبا کسی اعلی شخصیت کا سکواڈ ہے جسکو غریب موٹر سائیکل سوار کی کوئی ادا ناگوار گزری "۔

محمد ظریف نے لکھا کہ "تمہاری تنخواہ کے لیے ٹیکس دیتے ہیں تو تھپڑ کھانا بھی ہمارا فرض ہے،آقاؤں کی خوشنودی کیلیے کیڑے مکوڑوں کی دھلائی کوئی بڑی بات نہیں"

اس سے قبل عابد جمال قاضی نے بتایا کہ "پروٹوکول ڈیوٹی پر موجود اہلکاروں نے ترنول ریلوے کراسنگ پر موٹرسائیکل سوار کو پیٹا، یہ واقعہ ستائیس اگست کو شام تقریباً پانچ بجے پیش آیا اور ساتھ ہی نوٹس لینے کی اپیل کی "۔

ان کی ٹوئیٹ پر راولپنڈی پولیس بھی میدان میں آگئی اور اس رویئے کو غیرپیشہ وارانہ قرار دیتے ہوئے بتایا  کہ سی پی او نے نوٹس لے لیا ہے اور ایس ایس پی آپریشنز کو انکوائری کی ہدایت کردی، قصور وار اہلکاروں کو معطل کردیا گیا ہے اور ان کیخلاف سخت ایکشن لیا جائے گا، یقیناً ، خود احتسابی یقینی بنائی جائے گی "۔

پولیس کے اس اعلان اور واقعے پر ایک صارف نے لکھا کہ"یہ سب کچھ کسی دن ملک کو سول وار کی طرف لے جائے گا"۔

کئی دیگر صارفین نے بھی پولیس کی تربیت پر سوال اٹھایا اور ان کا کہنا تھا کہ اگر اس موقع پر ویڈیو نہ بنتی تو کسی کو خبر ہی نہ ہوتی، نہ ہی کسی نے ایکشن لینا تھا ، مار کھانے والے لوگ تو پہلے ہی ڈر کر بیٹھ چکے ہوتے ہیں، ایسے میں پولیس اہلکاروں کے سامنے موبائل یا کیمرہ بھی عام پر نہیں اٹھایا جاتا کیونکہ وہ بھی اسی طرح کے سلو ک کا نشانہ بن جاتے ہیں، ایسے بہت سے واقعات ہوں گے جن کی ویڈیو ز سامنے نہیں آتی۔

مزید :

قومی -جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -راولپنڈی -