امریکا خوبوں کی دنیا سے باہر نکلے، حقائق کا سامنا کرے:ایران 

امریکا خوبوں کی دنیا سے باہر نکلے، حقائق کا سامنا کرے:ایران 
امریکا خوبوں کی دنیا سے باہر نکلے، حقائق کا سامنا کرے:ایران 

  

تہران(آئی این پی)ایران نے کہا ہے کہ امریکا حقیقت کا ادراک کرتے ہوئے خوابوں کی دنیا سئے باہر نکل آئے، سلامتی کونسل کے ذریعے پابندیوں کی دوبارہ بحالی محض امریکا کی خام خیالی ہے، امریکا معاہدے سے اخراج کے بعد قانونی حیثیت کھو چکا ہے، اسنیپ بیک میکینزم کو استعمال کرنے کاقانونی حق صرف معاہدے میں شامل ممالک کا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے واضح کیا ہے کہ اگر امریکہ، ایران کے خلاف سلامتی کونسل کی پابندیوں کو دوبارہ بحال کرنے کے درپے ہے تو یہ صرف اس کی خام خیالی ہے۔اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے اپنے ایک ٹوئیٹ میں کہا کہ امریکی وزیر خارجہ مائک پومپﺅ اس کوشش میں ہیں کہ ایران کے خلاف سلامتی کونسل کی پابندیوں کو واپس پلٹا دیا جائے جبکہ یہ صرف ان کی خام خیالی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سلامتی کونسل کے سربراہ سمیت تیرہ رکن ممالک یہ واضح کر چکے ہیں کہ امریکہ اب جامع ایٹمی معاہدے کا رکن نہیں ہے اس لئے قرار داد بائیس اکتیس کو استعمال کرتے ہوئے وہ ایران کے خلاف کسی اقدام کی پوزیشن میں نہیں ہے اور وہ اس حوالے سے اپنی قانونی حیثیت کھو چکا ہے۔

خیال رہے کہ اسنیپ بیک میکینزم کو استعمال کرنے کا حق قانونی طور پر جامع ایٹمی معاہدے کے فریق ممالک کو ہی حاصل ہے اور امریکہ چونکہ خودسرانہ طور پر اس بین الاقوامی معاہدے کو مئی دوہزار اٹھارہ میں خیرباد کہہ چکا ہے، اس لئے وہ اس کے استعمال کا حق نہیں رکھتا اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے متفقہ طور پر امریکہ کے اس اقدام کی مخالفت کا اعلان کیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -