چائے کی دکان بند ہونے پر بھارتی شہری نے گینگسٹر ابوسلیم کا آدمی بن کر فلم ساز مہیش منجریکر کو بھتے کیلئے فون کردیا لیکن پھر نتیجہ کیا نکلا؟

چائے کی دکان بند ہونے پر بھارتی شہری نے گینگسٹر ابوسلیم کا آدمی بن کر فلم ساز ...
چائے کی دکان بند ہونے پر بھارتی شہری نے گینگسٹر ابوسلیم کا آدمی بن کر فلم ساز مہیش منجریکر کو بھتے کیلئے فون کردیا لیکن پھر نتیجہ کیا نکلا؟

  

ممبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں کورونا وائرس کے باعث چائے کی دکان بند ہونے اور مالی حالات خراب ہونے پر ایک شخص نے تنگ آ کر ایسا کام کر ڈالا کہ جیل میں پہنچ گیا۔ٹائمز آف انڈیا کے مطابق اس 34سالہ نوجوان کا نام میلند تل شنکر ہے جس نے گریجوایشن کر رکھی ہے لیکن ملازمت نہ ملنے کی وجہ سے دھیروی میں چائے کی دکان کھول لی۔ وہ بھی کورونا وائرس اور لاک ڈاﺅن کی وجہ سے بند ہو گئی اور وہ اپنے آبائی علاقے کھیڑ جانے پر مجبور ہو گیا۔ کھیڑ جا کر جب مالی حالات کے ہاتھوں تنگ ہوا تو اس نے ممبئی کے فلم ساز مہیش منجریکر کو فون کر دیا۔

میلند نے مہیش منجریکر کو فون کرکے بتایا کہ کہ وہ معروف گینگسٹر ابو سلیم کا آدمی ہے۔ اس نے مہیش کو دھمکی دی کہ وہ اسے فوری طور پر 34لاکھ روپے دے ورنہ سنگین نتائج کے لیے تیار ہو جائے۔ مہیش منجریکر نے بھتے کے لیے ملنے والی اس دھمکی کی پولیس کو رپورٹ کر دی اور پولیس نے فون نمبر ٹریس کرکے میلند کو گرفتار کر لیا اور عدالت میں پیش کر دیا۔ واضح رہے کہ ابو سلیم کئی طرح کے سنگین جرائم کا مرتکب قرار پا کر جیل میں سزا کاٹ رہا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -