عراقی فوج نے داعش کی چار کشتیاں ڈبو دیں،کشتیوں پر تنظیم کے لیے اسلحہ اور گولہ بارود لایا جا رہا تھا

عراقی فوج نے داعش کی چار کشتیاں ڈبو دیں،کشتیوں پر تنظیم کے لیے اسلحہ اور گولہ ...

 دبئی(آن لائن)عراقی فوج نے قبائلی سرداروں کی مدد سے دولت اسلامی (داعش) کے چودہ جنگجوؤں اور اسلحہ اور دھماکا خیز مواد لانے والی چار کشتیوں کو دریائے فرات میں ڈبو دیا ہے۔ عرا قی حکا م کے مطا بق داعش کے جنگجو مغربی شہر الرمادی پر دریائے فرات کی سمت سے ایک حملے کی تیاری کے لیے گولہ بارود جمع کر رہے تھے۔ادھر اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے شمالی شہر موصل کے علاقے میں داعش کے پانچ اہم ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے جس کے نتیجے میں اس جنگجو گروپ کے دسیوں کارکن ہلاک و زخمی ہوگئے ہیں۔ جبکہ تنظیم کے زیر استعمال گولہ بارود اور جنگی ساز و سامان کی بڑی مقدار ناکارہ بنادی گئی ہے۔صوبہ الانبار کے پولیس سربراہ میجر جنرل کاظم الفھداوی نے اس سے قبل دعویٰ کیا تھا کہ قبائلی سرداروں اور عراقی فوج پر مشتمل مشترکہ ٹاسک فورس نے صوبے کے مغرب میں البغدادی جزیرہ کے 14 دیہات کو انتہا پسندوں کے کنٹرول سے آزاد کرا لیا ہے۔میدان جنگ سے عراقی فوج اور داعش کے خلاف سرگرم قبائلیوں کی کامیابیوں کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں۔ ان میں صوبہ صلاح الدین میں یثرب کی جانب واقع متعدد دیہات داعش سے چھڑا لیے گئے ہیں۔ اب عراقی فوج اور قبائلی جنگجو شمالی شہر تکریت کی جانب پیش قدمی کی تیاری کر رہے ہیں۔فوجی ذرائع کے مطابق البیمشرکہ اور عراقی سکیورٹی فورسز کے مشترکہ دستے شام میں کوہ سنجار اور دوسرے علاقوں میں اپنا کں ٹرول مستحکم بناتے ہوئے جنوبی سمت سے انتہا پسندوں کے گرد محاصرہ تنگ کر رہے ہیں۔

مزید : عالمی منظر