نواز شریف کا اقتداربے نظیر کے خون کا صدقہ ہے،یوسف رضا گیلانی

نواز شریف کا اقتداربے نظیر کے خون کا صدقہ ہے،یوسف رضا گیلانی

ملتان (اے این این، آن لائن) پیپلزپارٹی کے رہنماء اور سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ نواز شریف کا اقتدار بے نظیر بھٹو کے خون کا صدقہ ہے، پیپلز پارٹی موجودہ حکومت کی قطعی حامی نہیں ، جب چاہیں دھڑن تختہ ہوسکتاہے مگرہم جمہوریت کی مضبوطی چاہتے ہیں، اگر عمران خان کنٹینر پر کھڑے ہو کر بے خوف خطر بات کرتے ہیں تو یہ جمہوریت کاہی ثمر ہے ، ملک سے دہشت گردی اور انتہا پسندی پیپلز پارٹی ہی ختم کر سکتی ہے، خصوصی عدالتیں آئین اور قانون کے مطابق بنائی جائیں ،بلاول بھٹو سکیورٹی مسائل کی وجہ سے کارکنوں میں نہیں آرہے، اے پی سی کے فیصلوں کے پابند ہیں ،اپنے بیٹے سید علی حیدر گیلانی کی بازیابی حساس معاملہ ہے اس پر کچھ نہیں کہہ سکتا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملتان آرٹس کونسل میں پیپلز پارٹی ضلع اور شہر کے زیر اہتمام ملتان آرٹس کونسل میں محترمہ بے نظیر بھٹو کی 7ویں برسی کے اجتماع سے خطاب میں کیا جس سے پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب کے صدر مخدوم شہاب الدین ، جنرل سیکرٹری ڈاکٹر جاوید صدیقی ، ایڈیشنل سیکرٹری جنرل خواجہ رضوان عالم ، سابق وفاقی وزیر ملک مختار اعوان ، سابق ایم این اے علی موسی گیلانی ، سابق صوبائی وزیر سید ناظم حسین ، احمد مجتبی گیلانی ، عثمان بھٹی ، رانا نیک محمد زاہد ، ایم سلیم راجہ ، شیخ فہیم ایڈووکیٹ ، بشریٰ نقوی ایڈووکیٹ ، شیخ غیاث الحق ایڈووکیٹ ، حبیب اللہ شاکر ایڈووکیٹ ، نشید عارف گوندل ، خواجہ نور مصطفی سمیت دیگر رہنماؤں نے خطاب کیا صدارت ضلعی صدر خالد حنیف لودھی نے کی ۔اس موقع پر یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اے پی سی کے فیصلوں کے مطابق حکومت جو آئینی ترامیم کرے گی پیپلز پارٹی اس کا ساتھ دے گی لیکن جو اقدامات اٹھائے جائیں وہ آئین اور قانون کے مطابق ہونے چاہئیں ۔ اے پی سی کے فیصلوں مطابق سپیڈی کورٹس کے قیام کا جو فیصلہ کیا گیا ہے پیپلز پارٹی اس کے حق میں ہے لیکن ان عدالتوں کا قیام بھی آئین اور قانون کے مطابق ہونا چاہیے بلاول بھٹو کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میڈیا پر بلاول کے بارے میں بہت سی خبریں نشرکی جارہی ہیں لیکن ان کے انفارمیشن سیکرٹری نے وضاحت کر دی ہے وہ سکیورٹی مسائل کی وجہ سے نہیں آرہے لیکن وہ عوام اور کارکنوں سے زیادہ وقت دور نہیں رہیں گے ۔ جب ان سے سید علی حیدر گیلانی کی بازیابی کے حوالے سے سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ یہ حساس معاملہ ہے میں اس پر کچھ نہیں کہہ سکتا ۔ قبل ازیں اپنے خطاب میں سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ ملک سے دہشت گردی اور انتہا پسندی پیپلز پارٹی ہی ختم کر سکتی ہے جو آج بھی ملک کی سب سے بڑی جماعت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ محتر مہ بے نظیر بھٹو بین الاقوامی لیڈر تھیں انہوں نے ایک آمر سے وردی اتروائی آج ملک میں جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو کی مرحون منت ہے انہوں نے تمام طبقات کے حقوق کے لئے جدوجہد کی اور جمہوریت کی خاطر جان کا نذرانہ دیا جب ملک میں ایمر جنسی نافذ ہوئی میڈیا اور عدلیہ پابندیاں عائد ہوئیں تو بے نظیر بھٹو پاکستان آئیں اور اپنی جدوجہد کا آغاز کیا مجھے بی بی کے ساتھ ایک ادنی کارکن ایم این اے ، وزیر اور سپیکر کے طور پر کام کرنے کا موقع ملا میرے نزدیک وہ ایک محنتی اور جدوجہدکرنے والی خاتون تھیں ۔ 2008ء کی حکومت میں ہم نے بی بی کے ویژن کے مطابق کام کرکے پانچ سال حکومت کی اور میثاق جمہوریت پر عمل کیا آج بھی اگر موجودہ حکومت میثاق جمہوریت پر عمل کرے تو پیپلز پارٹی حکومت کا ساتھ دینے کو تیار ہیں موجودہ حالات میں محتر مہ کی جتنی کمی محسو س ہو رہی ہے اس سے قبل نہیں تھی ہم نے وزیرستان کو دہشت گردوں سے آزاد کروایا ۔ سانحہ پشاور کے بعد آج پوری قوم متحد ہوئی ہے یہ پیپلز پارٹی کی پالیسی اور محتر مہ کا مشن تھا کہ پوری قوم متحد رہے ۔ یوسف رضاگیلانی

مزید : صفحہ آخر