ٹمبر مارکیٹ میں آتشزدگی پر حکومتی نااہلی کا الزام بے بنیاد، نقصان کا ازالہ کریں گے: شرجیل میمن

ٹمبر مارکیٹ میں آتشزدگی پر حکومتی نااہلی کا الزام بے بنیاد، نقصان کا ازالہ ...
ٹمبر مارکیٹ میں آتشزدگی پر حکومتی نااہلی کا الزام بے بنیاد، نقصان کا ازالہ کریں گے: شرجیل میمن

  


کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ کے وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ ٹمبر مارکیٹ میں آگ لگنے کے واقعے پر سیاست نہیں کرنی چاہئے، ایم کیو ایم کی طرف حکومتی غفلت کا الزام غلط ہے، کراچی کو لاوارث کہنے والے بتائیں کہ اگر حکومتی محکمے سوئے ہوئے تھے تو پھر آ گ کس نے بھجائی؟ الطاف حسین سے تعاون کی اپیل کرتے ہیں، نقصانات کا تخمینہ لگانے کیلئے کمیٹی بنا دی ہے اور ہر نقصان کا ازالہ کریں گے۔

ٹمبر ماکیٹ آتشزدگی: شرجیل میمن نے مستعفی ہونے کی پیشکش کر دی

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ میں آگ لگنے کے فوری بعد سے ہی کمشنر کراچی شعیب صدیقی کے ساتھ رابطے میں تھا اور واٹر بورڈ کے حکام کی مدد سے ہی آگ بھجائی جا سکی اور کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ ان کا کہنا تھا کہ فاروق ستار کی طرف سے الزام لگایا ہے کہ میں نے ان کا فون نہیں اٹھایا تو میں ان کو بتانا چاہتا ہوں کہ نان ایشوز پر سیاست نہ کریں، میں موقع پر آ کر آگ بجھانے کے عمل میں رکاوٹ ڈال کر فوٹو سیشت نہیں کروانا چاہتا تھا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم قائد الطاف حسین خود کہتے ہیں کہ ان کی پارٹی کی رابطہ کمیٹی کے ارکان زمینوں پر قبضے میں ملوث ہیں، اسی طرح کئی گھوست ملازمین بھی بھرتی کئے گئے تھے جن کو ہم نے نکالا ہے، کئی بار گورنر سندھ کو ان ملازمین کی شکایت کی مگر انہوں نے کوئی کاروائی نہیں کی تھی۔ انہوں نے واضح کیا کہ صوبائی وزیر جاوید ناگوری ٹمبر مارکیٹ میں موجود تھے اور انہوں نے آگ بجھانےکے سارے عمل کی مکمل نگرانی کی، فاروق ستار صاحب تو خود جائے حادثہ پر صبح دس بجے گئے حالانکہ وہ اس علاقے سے ایم این اے منتخب ہوئے ہیں۔

ان کے ہمراہ میڈیا سے بات چیت میں صوبائی وزیر بلدیات قادر پٹیل کا کہنا تھا کہ آگ لگنے کے واقعے پر کمیٹی بنا دی ہے جو نقصانات کا تخمینہ لگا رہی ہے، ہم کراچی والوں کے وارث ہیں اور انہیں یہ احساس نہیں ہونے دیں گے وہ لاوارث ہیں یا ان کی حکومت سوئی ہوئی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں جب کبھی بھی کوئی بڑا جلسہ ہوتا ہے تب ہی شہر میں ایسے کوئی واقعہ ہو جاتا ہے، میڈیا ہر جلسے کے بعد کی صورتحال دیکھ سکتا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ کچھ لوگ آگ لگنے سے پہلے ہی وہاں پہنچ گئے تھے وہ وہاں کیا کر رہے تھے؟ انہوں نے کہا کہ وہ بات بالکل بھی درست نہیں کہ ایم کیو ایم حکومت میں ہو تو سب ٹھیک ہے مگر جیسے ہی وہ حکومت سے نکلے تو کراچی والے لاوارث ہو جاتے ہیں۔

شرجیل میمن نے متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین سے تعاون کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایسے موقعوں پر اپنی پارٹی کو سیاست کرنے سے روکیں۔

مزید : قومی /اہم خبریں