فیس بک کو سبق سکھانے کے لیے زکر برگ کو نشانہ بنانے والے ہیکر کا اہم انکشاف

فیس بک کو سبق سکھانے کے لیے زکر برگ کو نشانہ بنانے والے ہیکر کا اہم انکشاف
فیس بک کو سبق سکھانے کے لیے زکر برگ کو نشانہ بنانے والے ہیکر کا اہم انکشاف

  


یروشلم (نیوز ڈیسک) فیس بک کی پالیسی کے مطابق اس کی سیکیورٹی میں خامیوں کی نشاندہی کرنے والوں کو سینکڑوں ڈالر کا انعام دیا جاتا ہے لیکن جب ایک فلسطینی نوجوان نے ایک خامی کی نشاندہی کی تو فیس بک سیکیورٹی ٹیم نے ان کی بات پر توجہ ہی نہ دی۔ بار بار گزارش کرنے کے بعد خلیل شرمیطہ نامی آئی ٹی ماہر نے ایک ایسا کام کیا کہ وہی انتطامیہ جو پہلے بات ہی نہیں سن رہی تھی اب اتنی تیز رفتاری سے ان کے پاس پہنچی کہ وہ خود بھی حیران رہ گئے۔

متحدہ امارات میں ڈرائیوروں کے لیے قوانین سخت کر دیے گئے ،بھاری جرمانے ہوں گے

خلیل کہتے ہیں کہ انہوں نے ایک ایسی خامی دریافت کی کہ جسے استعمال کرتے ہوئے کسی بھی شخص کی اجازت کے بغیر اس کی وال پر پوسٹ بھیجی جاسکتی ہے۔ جب ان کے بار بار بتانے پر فیس بک کی سیکیورٹی ٹیم نے توجہ نہ دی تو انہوں نے فیس بک کے سربراہ مارک زکربرگ کی وال پر نقب لگاتے ہوئے ایک پوسٹ بھیج دی جس میں ساری تفصیل بیان کردی۔ وہ کہتے ہیں کہ فوری طور پر فیس بک سیکیورٹی کی طرف سے میٹ جونز نامی انجینئر نے ان سے رابطہ کیا اور پوچھا کہ انہوں نے یہ کام کیسے کیا۔ مکمل تفصیلات ملنے کے بعد فیس بک نے خامی کو دور کرلیا لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ فیس بک قوانین کی خلاف ورزی کا بہانہ بنا کر انعامی رقم دینے سے پھر انکار کردیا۔ یہ اطلاعات بھی ہیں کہ ان کا اکاﺅنٹ بند کردیا گیا ہے۔ اب یہ سوال بھی پوچھا جارہا ہے کہ کیا اس سلوک کی وجہ یہ ہے کہ خلیل فلسطینی ہیں اور ایک امریکی کمپنی انہیں وہ مقام دینے سے کترارہی ہے جو ان کا جائز حق ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس